کرپشن کے معاملے پرپی سی بی کی زیروٹالرنس پالیسی، بھارت بکیوں کی سب سے بڑی مارکیٹ،احسان مانی

کرپشن کے معاملے پرپی سی بی کی زیروٹالرنس پالیسی، بھارت بکیوں کی سب سے بڑی ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کے چیئرمین احسان مانی نے کہا ہے کہ بھارت بکیز کی سب سے بڑی مارکیٹ ہے جو کرکٹ کی دنیا کو نقصان پہنچا رہی ہے۔ ایک نجی ٹی وی چینل سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب وہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے صدر تھے تو انہوں نے کرکٹ بورڈز کو ان بکیز کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا کہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کرکٹ کھیلنے والا ہر ملک فکسنگ کی لعنت سے متاثر ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرپشن کرکٹ کیلئے سب سے بڑا خطرہ ہے اور کرپشن کے معاملے پر پاکستان کرکٹ بورڈ کی زیرو ٹالرنس پالیسی ہے۔ چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ فکسنگ میں ملوث تمام کرپٹ کھلاڑیوں کو ٹیموں میں شامل نہیں کیا جائے گا، جب میں نے پی سی بی کے چیئرمین کا عہدہ سنبھالا تو پی سی بی کے معاملات میں گڑ بڑ تھی لیکن اب نظام بہتر ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی سی بی کے 900 سے زائد ملازمین ہیں جنہوں نے افرادی قوت کے لحاظ سے اسے سب سے بڑا کرکٹ بورڈ بنایا ہے، بورڈ کی آڈٹ رپورٹ پی سی بی کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کی جائے گی تاہم ہم کسی کو بے روزگار نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کرکٹ سے متعلق وزیراعظم عمران خان سے بہتر کوئی نہیں جانتا، اسی طرح اہم فیصلوں کے لیے سابق کرکٹرز کی ان پٹ بھی لی جائے گی۔ کرکٹ ورلڈ کپ کے کپتان کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کو متنازعہ نہیں بنانا چاہیئے، سرفراز احمد بطور کپتان بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ محسن حسن خان کی سربراہی میں ایک چار رکنی کمیٹی ملک میں کرکٹ کے معیار کو بہتر بنانے کے لیے کام کر رہی ہے، یہ کمیٹی جلد ہی وزیراعظم عمران خان کو اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -