شجاع آباد‘ ہلاکت کیس ‘ دائی سمیت 5افراد کیخلاف مقدمہ اندراج کی درخواست

شجاع آباد‘ ہلاکت کیس ‘ دائی سمیت 5افراد کیخلاف مقدمہ اندراج کی درخواست

  

شجاع آباد (نمائندہ خصوصی)دائی کے ہاتھوں نجمہ کی ڈیلیوری چیر پھاڑ ہلاکت نجمہ کے والدمحمد شریف نے تھانہ سٹی شجاع آبادکیخلاف ملزمہ دائی فرزانہ سمیت پانچ افراد کے خلاف(بقیہ نمبر40صفحہ7پر )

اندراج مقدمہ کی درخواست دے دی ہے تا حال مقدمہ درج نہ ہوا محمد شریف نے تھانہ سٹی کو دی جانے والی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میر ی دختر نجمہ بی بی کی ایک سال قبل اجمل سے شادی ہوئی مورخہ 8-11-18کو علاقہ کی دائی گامن نجمہ کی ساس کے ہمراہ نجمہ کو زچگی کے سلسلہ میں فرزانہ کلینک تاج کالونی شجاع آباد لے آئی اور مجھے بھی اطلاع کر دی جس پر میں اور میرے داماد فرزانہ کلینک پہنچ گئے نجمہ کو فرزانہ نے چیک کیا جس نے کہا کہ اس کا اپریشن ضروری ہے ورنہ زچہ بچہ دونوں کا خطرہ ہے فرزانہ نے ہم سے تیرہ ہزار اپریشن کے وصول کر کے نجمہ کا پیٹ چاک کر کے بیٹا اٹھا لیااور نجمہ کی حالت بگڑناشروع ہو گئی ہم نے اسے سنبھالنے کی کوشش کی جو نہ سنبھل سکی جس سے نجمہ کا غلط پیٹ چاک ہونے جاں بحق ہوگئی فرزانہ فرضی طور پر اپنے آپ کو جعلی ڈاکٹر اور جعلی ڈسپنسر وں کو رکھ کر دانستہ طور پر پیسوں کی خاطر جان سے ختم کر دیا ہے ملزمان کاروائی نہ کرنے کیلئے منت سماجت کرتے رہے ہیں جو میں نہ مانا ملزمان فرزانہ ،عامر، عثمان ۔ ادریس جو اپنے آپ کو ڈسپنسر کہتے ہیں اور دائی گامن کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے محمد شریف نے چیف جسٹس آف پاکستان سے ا ز خود نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

درخواست

مزید :

ملتان صفحہ آخر -