نئی صنعتی پالیسی سے پنجاب میں صنعت کاری کا عمل تیزہو گا : میاں اسلم اقبال

نئی صنعتی پالیسی سے پنجاب میں صنعت کاری کا عمل تیزہو گا : میاں اسلم اقبال

  

لاہور (آن لائن) صوبائی وزیر صنعت وتجارت میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ سرمایہ کاری کا فروغ ہماری پہلی ترجیح ہے اوراس مقصد کے لئے ملکی وغیرملکی سرمایہ کاروں کوایک ہی چھت تلے ہر ممکن سہولتیں فراہم کررہے ہیں۔سرمایہ کاروں اور ان کی سرمایہ کاری کو مکمل قانونی تحفظ بھی دیں گے۔پاک سعودی تجارتی تعلقات کو فروغ اور سعودی تاجروں کو پنجاب میں سرمایہ کاری کے لئے تمام سہولتیں فراہم کریں گے۔پنجاب سرمایہ کاری بورڈ میں ملکی وغیر ملکی سرمایہ کاروں کی سہولت کے لئے ایک خصوصی سیل بھی بنایا جارہاہے۔نئی صنعتی پالیسی مرتب کر لی گئی ہے اور اس پالیسی کے تحت صوبے میں صنعت کاری کا عمل تیز ہو گا۔نئی صنعتی پالسی کے تحت دس سال کے لئے انکم ٹیکس میں ٹیکس ہالیڈے دے رہے ہیں جبکہ مشینری کی درآمد پر ڈیوٹی بھی زیرو ہو گی۔سپیشل اکنامک زونز کے قیام اور شیخوپورہ میں قائداعظم اپیرل پارک کے منصوبے پر کام کی رفتار مزید تیزکی جائے گی۔صوبائی وزیر صنعت میاں اسلم اقبال نے ان خیالات کا اظہار مقامی ہوٹل میں انٹرنیشنل کمپنی سابک کے زیر اہتمام’’ پیکنگ کے لئے سابک سلیوشنز کے موضوع پر ٹیکنیکل سیمینار‘‘سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سابک کمپنی کے پاکستان میں کنٹری ہیڈ خالد محموداور پاک سعودی جائنٹ چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر میاں محمود بھی اس موقع پرموجود تھے۔صنعت کاروں اور تاجروں کی بڑی تعداد نے بھی تقریب شرکت کی۔صوبائی وزیر صنعت وتجارت میاں اسلم اقبال نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کی سابک کمپنی نے پاکستان میں سرمایہ کاری کی ہے۔پاکستان اور سعودی عرب کے مابین برادرانہ تعلقات موجود ہیں اور ہماری حکومت چاہتی ہے کہ برادراسلامی ملک پاکستان میں زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کریں۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے صوبے میں سرمایہ کاری کے فروغ کے لئے ساز گارماحول پیدا کیا ہے جس کی وجہ سے ملکی وغیرملکی سرمایہ کاری میں اضافہ ہورہاہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اوروزیراعلی پنجاب کے ویژن اور مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق ہنر مند افرادی قوت کی تیاری پر خصوصی توجہ مرکوز کی گئی ہے۔تکنیکی پروگراموں کے نصاب کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کیا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین اور دیگر ممالک سے صنعتیں پاکستان آرہی ہیں اور ہمارا فوکس ٹیکنالوجی کی منتقلی پر ہے۔انہوں نے کہا کہ صوبے میں ہاؤسنگ کا ایک بڑا منصوبہ شروع کیا گیا ہے جس کے تحت بے گھر افراد کے لئے 50لاکھ گھر بنائے جائیں گے اور اس منصوبے پر عملدرآمد سے دیگر متعلقہ صنعتیں بھی فروغ پائیں گی۔انہوں نے کہا کہ ٹیکنیکل اداروں سے فارغ التحصیل گریجویٹس کو اپنا کاروبار شروع کرنے کے لئے آسان شرائط پر قرضوں کی فراہمی کاایک بڑا پروگرام لارہے ہیں جس کے تحت انہیں ایک لاکھ سے تیس لاکھ روپے کے قرضے دئیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ صوبے میں ایسی صنعتیں لانا چاہتے ہیں جن سے ملک کی برآمدات بڑھیں اور قومی معیشت مضبوط بنیادوں پر استوار ہو۔صوبائی وزیر نے کہا کہ سعودی عرب کی سابک کمپنی گزشتہ 35سالوں سے پاکستان کی مارکیٹ میں مضبوط پارٹنر ہے اور کمپنی نے پاکستان میں کامیاب سرمایہ کاری کی ہے اور ہم کمپنی کے ساتھ اشتراک کار بڑھانے کے حوالے سے ہر ممکن تعاون جاری رکھیں گے۔

مزید :

کامرس -