سرکاری اراضی کی جعلسازی سے منتقلی، کلکٹراشتمال گرفتار ، اے ڈی سی جی، پٹولری اور قانونگواشتہاری قرار

سرکاری اراضی کی جعلسازی سے منتقلی، کلکٹراشتمال گرفتار ، اے ڈی سی جی، پٹولری ...

  

لاہور(اپنے نمائندے سے) 92کنال 12مرلہ سرکاری اراضی کی جعلسازی سے منتقلی ،کلکٹر اشتمال کی گرفتاری کا سبب بن گئی، محکمہ اینٹی کرپشن کے ڈائریکٹر محمد اصغر جوئیہ نے الزامات ثابت ہونے پر ضلع لاہور کے کلکٹر اشتمال شمس زماں کو گرفتار کرتے ہوئے حوالات میں بند کر دیا جبکہ اس جعلسازی میں ملوث سابق کلکٹر اشتمال اور موجودہ اے ڈی سی جی بورے والا نوید عالم، پٹواری آصف اعظم اور قانونگو محمد اسلم کے خلاف جوڈیشل ایکشن کی منظوری دیتے ہوئے اشتہاری قرار دیدیا، روز نامہ ’’پاکستان‘‘ کو ملنے والی معلومات کے مطابق تحصیل سٹی کے پٹوار سرکل نیاز بیگ میں سرکاری اراضی کو بوگس ڈگری کا حوالہ دیتے ہوئے فرضی بندوں کے نام منتقل کیا گیا اور بعدازاں موجودہ کلکٹر اشتمال شمس زمان جو کہ اس وقت کے تحصیلدار تھے نے پٹواری آصف اعظم قانگو محمد اسلم کیساتھ ملکر ایک ہی دن میں اراضی کے انتقالات کی تصدیق کرتے ہوئے جعلسازوں کو مالی فوائد جبکہ حکومت پنجاب کو وفاقی حکومت کی بیش قیمتی جائیداد سے محروم کر دیا ذرائع نے آگاہی دی کہ اس وقت کے کلکٹر اشتمال نوید عالم بھی اس جعلسازی میں ملوث تھے جو کہ اس وقت اے ڈی سی جی بورے والا تعینات ہیں ۔ دوسری جانب اس کیس کے انوسٹی گیشن آفیسر محمد شاہ رخ نیازی کا کہنا ہے کہ مقدمہ نمبر636/16کی تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کر دیا گیا ہے 92کنال نہیں بلکہ 1000 کنال کا کیس سامنے آئے گا اور ہم 1000 ہزار کنال سرکاری اراضی کی ریکوری کریں گے ابتدائی طور پر 92کنال 12مرلہ اراضی کی مالیت تقریباً 92کروڑ روپے بنتی ہے ۔

جعلسازی

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -