سموگ سے پیدا ہونیوالے الرمراض کی ادویات غائب ، مارکیٹ میں جعلی میڈیسن فروخت ہونے لگیں

سموگ سے پیدا ہونیوالے الرمراض کی ادویات غائب ، مارکیٹ میں جعلی میڈیسن فروخت ...

  

لاہور(جاوید اقبال )پنجاب میں سموگ کے بادل گہرے ہوتے ہیں لاہور سمیت تمام شہروں میں اینٹی الرجی ادویات کا بحران پیدا ہو گیا ۔سموگ سے پیدا ہونے والی بیماریوں کی ادویات مارکیٹ میں دستیاب نہیں ہیں اور جن میڈیکل سٹورز کے پاس ہیں وہ اصل قیمت سے 300 فیصد زائد وصول کررہے ہیں۔دوسری طرف ڈرگ مافیا نے اینٹی فلو، اینٹی الرجک ادویات کے مارکیٹ سے غائب ہونے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بڑی تعداد میں جعلی ادویات سپلائی کر دیں۔ رپورٹ کے مطابق سموگ سے نہ صرف سانس، دمہ اورپھیپھڑے کی بیماریاں بڑھ رہی ہیں بلکہ زیادہ تر لوگ آنکھ، ناک، کان اورگلے کی بیماری میں مبتلا ہو رہے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ہر دوسرے تیسرے گھرانے میں دو سے تین لوگ فلو میں مبتلا ہیں۔ اس مرض کے علاج کیلئے قابل ذکر ادویات میں ایرینک فورٹ،کولڈریکس، پیناڈول سی ،ایف اور ٹیمی فلو شامل ہیں جو اس وقت مارکیٹ میں دستیاب نہیں ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ان ادویات میں سے ایرینک فورٹ سب سے زیادہ استعمال کی جاتی ہے جو لاہور میں بھی صرف چند سٹوروں پر دستیاب ہے جبکہ لاہور ،ملتان ،فیصل آباد، راولپنڈی۔ گوجرانوالہ کے 90 فیصد میڈیکل سٹورز اور فارمیسیوں پر ایرینک فورٹ دستیاب نہیں اور جن سٹوروں پرملتی ہے وہ پانچ گنا زائد قیمت وصول کر رہے ہیں۔دوسری جانب جعلی ادویات کی فروخت پر محکمہ صحت اور ڈرگ انسپکٹرنے آنکھیں بند کررکھی ہیں۔اس حوالے سے صوبائی وزیر صحت یاسمین راشد نے کہا ہے کہ مقررکردہ قیمت سے زائد پیسے وصول کرنے والی کمپنیوں اور سٹوروں کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔

ادویات نایاب

مزید :

صفحہ اول -