کراچی کو آبادی کے لحاظ سے وسائل نہیں مل رہے ہیں، فردوس شمیم نقوی

کراچی کو آبادی کے لحاظ سے وسائل نہیں مل رہے ہیں، فردوس شمیم نقوی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اورپاکستان تحریک انصاف کے رہنما فردوس شمیم نقوی نے کہاہے کہ کراچی کو اس کی آبادی کے لحاظ سے وسائل نہیں دیئے جاتے حالانکہ سب سے زیادہ آمدنی اسی شہر سے حکومت کو ملتی ہے،کراچی سے حکمران جماعت کو نمائندگی بہت کم ملتی ہے، جس کی وجہ سے ان کی توجہ اندرون سندھ کی جانب مبذول رہتی ہے۔میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے کہاکہ 2006سے کراچی کی آبادی 4، ساڑھے 4فیصد کے حساب سے بڑھ رہی ہے جس کی وجہ سے پانی کی ضرورت پوری نہیں ہو سکتی۔ کراچی میں 1200 ہزار ٹن روزانہ کا کچرا پیدا ہوتا ہے اور اس میں سے 8000 ضائع ہوتا ہے باقی کو جلایا جاتا ہے جس کی وجہ سے ماحولیات کا مسئلہ پیدا ہوتا ہے۔جب ایم کیو ایم کے پاس کراچی کی میئر شپ تھی اس وقت بھی میئر کراچی اپنے اختیارات پوری طرح استعمال نہیں کر رہے تھے۔مختلف اداروں کو بدحالی سے نہیں بچایا گیا۔اگر شہری حکومت کو ایک رول ماڈل بنایا جاتا تو آج صورتحال بہتر ہوتی۔انہوں نے شکوہ کیا کہ کراچی کو اس کی آبادی کے لحاظ سے وسائل نہیں دیئے جاتے حالانکہ سب سے زیادہ آمدنی اسی شہر سے حکومت کو ملتی ہے۔کراچی میں 1000 بسوں کی ضرورت ہے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -