ضلع عمر کوٹ میں سیف ہاؤس 6 ماہ سے فعال لیکن ایک کیس بھی رجسٹرڈ نہ ہوسکا

ضلع عمر کوٹ میں سیف ہاؤس 6 ماہ سے فعال لیکن ایک کیس بھی رجسٹرڈ نہ ہوسکا
ضلع عمر کوٹ میں سیف ہاؤس 6 ماہ سے فعال لیکن ایک کیس بھی رجسٹرڈ نہ ہوسکا

  

عمرکوٹ(سید ریحان شبیر) ڈپٹی کمشنر عمرکوٹ ندیم الرحمان میمن نے عمرکوٹ کے سیف ہاؤس اور ریسکیو سینٹر کے متعلق بنائی گی کمیٹی کے نمائندوں کے ساتھ ڈپٹی کمشنر آفیس کے دربار ہال میں اجلاس طلب کیا۔

اس موقع پر سیف ہاوس کے فوکل پرسن اور اسسٹنٹ کمشنر عمرکوٹ جھامن داس سونی نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ضلع عمرکوٹ میں ایک سیف ہاؤس کافی عرصے سے فعال ہے اور گذشتہ چھ ماہ سے ابھی تک کوئی بھی کیس رجسٹرڈ نہیں ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت سیف ہاؤس میں تمام بنیادی سہولیات موجود ہیں اور صفائی ستھرائی کے بھی بہتر انتظامات کئے گے ہیں۔ڈپٹی کمشنر  ندیم الرحمان میمن نے ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ سیف ہاؤس کو مزید فعال کیا جائے اور سیف ہاؤس کی چار دیواری اور دیگر بنیادی سہولیات کے لیے محکمہ وومین ڈویلپمینٹ کو خط لکھا جائے ۔انہوں نے ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر سلیم شیخ کو ہدایت کی کہ سیف ہاؤس پر آنے والی متاثرہ عورتوں کے لیے تمام میڈیکل سہولیات کی یقینی بنائی جائے اور ایک فوکل پرسن بھی مقرر کیا جائے ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ چاروں تعلقوں میں ریسکیو سینٹر فعال کئے جائیں گے جس کی نگرانی کے لیے محکمہ پولیس اپنے فوکل پرسن مقرر  کرئیگی ۔ اجلاس میں ایس ایس پی عمرکوٹ اعجاز شیخ ،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ون طاہر میمن ، شوشل ویلفیر آفیسر سروپ مالہی ، دیگر محکموں کے آفسران اور این جی اوز کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -