اوقاف اراضی فروخت کیس ،سپریم کورٹ نے نواز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا

اوقاف اراضی فروخت کیس ،سپریم کورٹ نے نواز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا
اوقاف اراضی فروخت کیس ،سپریم کورٹ نے نواز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سپریم کور ٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو پاکپتن دربار کے اطراف دکانوں کی تعمیر سے متعلق کیس میں 4دسمبر کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ۔

کیس کی سماعت کے دوران نواز شریف نے وکیل کی جانب سے 1985ء میں وزیراعلیٰ پنجاب کی حیثیت سے اپنا جانب سے جواب جمع کرایا تاہم عدات عالیہ نے اسے مسترد کر دیا۔چیف جسٹس نے نواز شریف کے وکیل سے استفسار کیا کہ اس سمری پر انہوں نے دستخط کئے، جس کے جواب میں منور اقبال ایڈووکیٹ نے کہا کہ ریکارڈ پر میاں نواز شریف کے دستخط نہیں ہیں۔

چیف جسٹس نے وکیل سے کہا کہ منور اقبال آپ کو پتا ہے آپ کیا بات کہہ رہے ہیں؟ نواز شریف نے دستخط نہیں کیے تو اس کا مطلب ہے جعل سازی ہوئی، نواز شریف تین بار ملک کے وزیراعظم رہے ہیں، آپ انکار کر کے ان کا سارا سیاسی کیرئیر تباہ کر رہے ہیں۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ اوقاف کی زمین ڈی نوٹیفائی ہو کر درگاہ متولی کے پاس چلی گئی، اس کے بعد زمین دوسرے لوگوں کو بیچ دی گئی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -