رفع حاجت میں مصروف آدمی کو خطرناک سانپ نے مردانگی سے محروم کردیا

رفع حاجت میں مصروف آدمی کو خطرناک سانپ نے مردانگی سے محروم کردیا
رفع حاجت میں مصروف آدمی کو خطرناک سانپ نے مردانگی سے محروم کردیا

  

بنکاک(نیوز ڈیسک)سانپ کا حملہ کتنی خوفناک بات ہے یقیناً یہ بتانے کی ضرورت نہیں، لیکن تھائی لینڈ سے تعلق رکھنے والا ایک نوجوان تو کچھ زیادہ ہی بدقسمت نکلا۔ ایک گھٹیا صفت سانپ نے بیچارے پر اُس وقت حملہ کیا جب وہ ٹوائلٹ پر بیٹھا تھا، اور حملہ بھی ایسی جگہ پر کہ زندگی بھر کے لئے مردانہ صلاحیت سے ہی محروم کر ڈالا۔ 

دارلحکومت بنکاک سے تعلق ر کھنے والے نوجوان کائی پانگ پان کا کہنا ہے کہ وہ پیشاب کی حاجت رفع کرنے کے لئے ٹوائلٹ پر بیٹھا تھا اور جب اٹھنے ہی والا تھا تو کسی چیز نے لپک کر اس کے جسم کے مردانہ حصے کو اپنے دانتوں میں دبوچ لیا۔ کائی پانگ پان نے دیکھا کہ یہ ایک سانپ تھا جس کے دانت اس کے عضو میں پیوست ہوچکے تھے۔ 

خوف سے چیختے ہوئے نوجوان نے سانپ کے سر کو پکڑ کر زور سے جھٹکا تو اس کے دانت تو عضو سے نکل گئے البتہ ساتھ ہی خون کا فوارہ پھوٹا اور واش روم کا فرش اس کے خون سے لال ہوگیا۔ کائی پانگ پان کی چیخیں سن کر ہمسائے اس کی مدد کو دوڑے۔ اسے فوری طور پر ہسپتال لیجایا گیا جہاں ابتدائی معائنے سے معلوم ہوا کہ  سانپ کے دو نوکیلے دانت مردانہ حصے کے نچلے حصے میں اور دو اوپر والے حصے میں پیوست ہوئے تھے۔ ان زخموں سے خون روکنے کے لئے 15 ٹانکے لگانا پڑے۔ 

اس کے بعد کائی پانگ پان کے گھر پر سانپ کی تلاش شروع ہوئی اور بالآخر آدھے گھنٹے بعد اسے پکڑلیا گیا۔ یہ جس واش روم میں کائی پانگ پان پر حملہ آور ہوا تھا اُسے چھوڑ کر دوسرے واش روم میں جاچھپا تھا، جہاں سے بالآخر اسے پکڑلیا گیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -