ایس پی طاہر داوڑ کا قتل وفاقی اور صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ،حکومت اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے حقائق سامنے لائے:سردار حسین بابک

ایس پی طاہر داوڑ کا قتل وفاقی اور صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ...
ایس پی طاہر داوڑ کا قتل وفاقی اور صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ،حکومت اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے حقائق سامنے لائے:سردار حسین بابک

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے اسلام آباد سے اغوا ہونے والے ایس پی طاہر داوڑ کے بیدردی سے قتل پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ واقعہ مرکزی اور صوبائی حکومتوں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق سردار حسین بابک نے غمزدہ خاندان سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے مقتول ایس پی کی مغفرت کیلئے دعا کی اور کہا کہ طاہر داوڑ کا اغواء اور بیدردی سے قتل کر کے کیا پیغام دیا جا رہا ہے؟صوبائی حکومت کے ایک آفیسر کے اغوا اور بے دردی سے قتل نے حکومت کی غیر ذمہ داری اور غیر سنجیدگی ظاہر کر دی ہے،ملک میں ایک سیکیورٹی افسر محفوظ نہیں تو شہریوں کی جان و مال کے تحفظ کی توقع کس سے کی جائے ؟۔سردار حسین  بابک نے  کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں اس واقعے کی تفصیلات سامنے لائیں اور قوم کے سامنے اپنی ناکامی کا اعتراف کریں ،ملک کے دارالخلافہ سے پولیس افسر کے اغواء اور قتل نے کئی سوالات کو جنم دیا ہے اور ایسا لگ رہا ہے کہ حکومتوں کو عوام کی جان ومال کی کوئی پرواہ نہیں اور وہ صرف حکمرانی کے نشے میں مست ہیں۔انہوں نے کہا کہ پختونخوا پولیس نے دہشت گردی کے خلاف جانوں کے نذرانے پیش کئے ہیں اور انتہائی بہادری کے ساتھ دہشت گردوں کا مقابلہ کیا ،طاہر داوڑ کے قتل کی اعلیٰ سطح پر تحقیقات ہونی چاہئے اور قاتلوں کو قرار واقعی سزا دی جائے۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -