ہریانہ میاں خیل افغان مہاجر کیمپ کو بجلی فراہم کی جائے،عمائدین

    ہریانہ میاں خیل افغان مہاجر کیمپ کو بجلی فراہم کی جائے،عمائدین

  



پشا ور (سٹی رپورٹر)ہریانہ میاں خیل اٖفغان مہاجر کیمپ کے رہاشئیوں نے عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کر کے مہاجر کیمپوں میں علیحدہ میٹر نظام کے تحت بجلی کی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔گزشتہ روز پشاور پریس کلب میں افغان مہاجرین متحدہ مرکزی شوری چیئرمین حاجی دوست محمد نے دیگر مہاجرین کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ مہاجر کیمپوں میں پہلے بجلی نہیں تھی تاہم بعدازاں افغان کمشنریٹ کی کوششوں سے بجلی کی فراہمی یقینی بنائی۔انہوں نے کہا کہ بجلی کے فراہمی کے بعد بجلی بل ڈومسٹک کے بجائے کمرشل ریٹ پر بل اتے تھے جسکے کے خلاف ہم متعلقہ حکام سے رابطے کیے جس پر حکام کی جانب سے سپٹنگ سیسٹم متعارف کروایا جسکے تحت ایک میٹر پر متعدد گھروں کی بجلی دی جاتی تھی جو 32سالوں تک یہی نظام چلا جبکہ پیسکو حکام کی جانب سے بعد میں ٹیرف بڑھا دئے گئے جسکی وجہ یسے فی یونٹ 21روپے تک چلا گیا جو مہاجرین کے بس سے باہر تھی۔انہوں نے کہا کہ یونٹ برھنے کی وجہ سے علاقہ میں بجلی منقطع ہوئی اور مدارس،گھروں میں پانی نا پید ہو گیا جبکہ رمجان کا مہینہ تھا جسکو مد نظر رکھتے ہوئے علاقہ کے عمائدین نے سپلٹ میٹر سیسٹم کے حصول کیلئے ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ میں ریٹ دائر کی جو منظور ہوئی اور عدلاتوں نے پیسکو حکام کو ہدایت کی کہ مہاجر کیمپوں میں علحدہ میٹر نظام کے تحت بجلی کی فراہمی ممکن بنائی جائے جس پر آج تک عمل درآمد نہیں ہوا ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کرتے ہوئے مہاجر کیمپوں میں علیحدہ میٹر نظام کے تحت بجلی فراہم کی جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر