نجی تعلیمی اداروں کارجسٹریشن منسوخی کیخلاف ہائیکورٹ سے رجوع،فریقین کو نوٹسز

نجی تعلیمی اداروں کارجسٹریشن منسوخی کیخلاف ہائیکورٹ سے رجوع،فریقین کو ...

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی)حکومت کی مقررکردہ فیس کے مطابق نئے واؤچر جاری نہ کرنے پر رجسٹریشن کی منسوخی کے خلاف نجی تعلیمی اداروں نے لاہور ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا۔مسٹر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے اس سلسلے میں نجی تعلیمی اداروں کی طرف سے دائر درخواستوں پر ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی اور پنجاب حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 15نومبر تک جواب طلب کر لیا ہے۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی نے عدالتی حکم کے مطابق مقررکی گئی فیس کی عدم وصولی اور نئے فیس چالان جاری نہ کرنے پر 5بڑے نجی تعلیمی اداروں کے 29سکولوں کی رجسٹریشن منسوخ کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا جسے ان تعلیمی اداروں نے لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کیاہے،درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ ڈسٹرکٹ رجسٹریشن اتھارٹی نے پرائیویٹ سکولوں کے لئے فیسوں کا شیڈول اخبار میں جاری کیا، اتھارٹی کی جانب سے مقرر کی گئی فیسیں حقائق کے برعکس ہیں، ان فیسوں سے اخراجات بھی پورا کرنا مشکل ہو جائے گا،درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ڈسٹرکٹ رجسٹریشن اتھارٹی کے اقدام کو نامناسب قراردے کر کالعدم کیا جائے۔عدالت نے نجی سکولوں کی بھاری فیسوں کے خلاف دائر شہریوں کی درخواستوں اور زیرنظر کیس کو یکجا کرنے کی ہدایت بھی کی ہے،جن بڑے نجی تعلیمی اداروں کے 29سکولوں کی رجسٹریشن منسوخ کی گئی ہے ان میں بیکن ہاؤس سکول سسٹم،لاہورگرائمر سکول، لاکاس، روشن اسلامک اور ایس سی آئی ایل شامل ہیں۔اس کیس کی مزید سماعت15نومبر کو ہوگی۔

نجی تعلیمی ادارے 

مزید : صفحہ آخر