پی پی اے ایف کا اطالوی ترقیاتی تعاون کے اشتراک سے تربیتی سیشن کا انعقاد

  پی پی اے ایف کا اطالوی ترقیاتی تعاون کے اشتراک سے تربیتی سیشن کا انعقاد

  



لاہور(پ ر)پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) نے اطالوی ترقیاتی تعاون کے ادارے اور اٹلی کے لیوس بزنس اسکول کے اشتراک سے نوجوانوں میں تعلیم، صحت اور غذائیت سے متعلق بنیادی آگہی بڑھانے اور سیکھنے کے نئے مواقع کی فراہمی سے متعلق تربیتی سیشنز کا آغاز کیا ہے۔ اس سرگرمی میں اطالوی حکومت کے مالی تعاون کی بدولت خیبرپختونخوا، بلوچستان اور فاٹا میں پی پی اے ایف کے پروگرام فار پاورٹی ریڈکشن سے مقامی افراد مستفید ہوں گے۔ اس ضمن میں پہلی تربیتی سرگرمی کا آغاز پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز (پی سی آر ڈبلیو آر) میں کیا گیا۔ افتتاحی تقریب میں پاکستان میں اطالوی ترقیاتی تعاون کی ڈائریکٹر ایمانیولا بینی، پی پی اے ایف کی ہیڈ آف پروگرامز سیمی کمال اور پی سی آر ڈبلیو آر کے سربراہ محمد اشرف نے شرکت کی۔ ایمانیولا بینی نے پی پی اے ایف کی تخفیف غربت کے خاتمے کے لئے کاوشوں کو سراہا اور غربت سے نمٹنے کے لئے جدت انگیز طریقے اختیار کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے نوجوانوں کے کردار کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا، "نوجوان تبدیلی لانے میں بنیادی کردار ادا کرسکتے ہیں اور پی پی اے ایف کے اشتراک سے مقامی سطح پر تربیتی سیشنز کے ذریعے ہمارا عزم ہے کہ مقامی آبادی کے افراد اپنی زندگیوں میں تبدیلی لانے کے لئے جدت انگیز طریقوں سے مطابقت حاصل کریں۔"

اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے پی پی اے ایف کی ہیڈ آف پروگرامز سیمی کمال نے کہا، "اس تربیت کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ معیاری طریقے تلاش کرکے انہیں غربت کے خاتمہ اور نوجوانوں کو بااختیار بنانے کے لئے استعمال کیا جائے۔ اس سے تبدیلی لانے والے افراد بااختیار ہوسکیں گے۔ پی پی اے ایف گزشتہ 20 سالوں میں پسماندہ طبقات کو بے شمار خدمات فراہم کرچکا ہے اور ہم اپنے تجربہ و علم کو بروئے کار لاتے ہوئے اسی جذبے کے ساتھ یہ سفر جاری رکھیں گے۔"

پی سی آر ڈبلیو آر کے سربراہ محمد اشرف نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا، "نئی کامیابیوں کی خواہش کی تکمیل کرنے والے نوجوان معاشرے کا ستون ہے، اب نوجوانوں پر وسائل لگانے کا وقت ہے تاکہ ہم روشن مستقبل دیکھ سکیں۔ عمل کے بغیر علم کی کوئی اہمیت نہیں، اس لئے یہ ہر ایک کے لئے ضروری ہے کہ وہ علم حاصل کرے اور اپنے علاقوں میں تبدیلی لانے کے لئے کام کرے۔"

مزید : کامرس