عدالتی حکمنامہ کی غلط تشریح، چیئرمین سی ڈی اے نے ذمہ داری قبول کر لی

  عدالتی حکمنامہ کی غلط تشریح، چیئرمین سی ڈی اے نے ذمہ داری قبول کر لی

  



اسلام آباد(آئی این پی) توہین عدالت کیس میں چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد نے حکم نامہ کی غلط تشریح کرنے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے عدالت سے غیر مشروط معافی مانگ لی،عدالت نے چیئرمین سی ڈی اے کو تصحیح شائع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے توہین عدالت کیس نمٹا دیا،عدالت نے ریمارکس دیئے کہ جو کام آپ کا ہے وہ آپ کریں عدالتوں پر نہ ڈالیں،سی ڈی اے صحیح طریقے سے کام نہیں کررہا،پانچ سال میں یہاں پرہوں پتہ ہے یہ جان بوجھ کر کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں عدالت سے غلط حکم نامہ منسوب کرنے پر چیئرمین سی ڈی اے کیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی، جسٹس عامر فاروق نے چیئرمین سی ڈی اے سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آج کل توہین عدالت کا سیزن ہے یہ دیکھ لیجیے گا،جسٹس عامر فاروق نے ہدایت کی کہ سی ڈی اے اشتہار شائع کرے،جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیئے کہ جو کام آپ کا ہے وہ آپ کریں عدالتوں پر نہ ڈالیں،سی ڈی اے صحیح طریقے سے کام نہیں کررہا،پانچ سال میں یہاں پرہوں پتہ ہے یہ جان بوجھ کر کیا گیا۔چیئرمین سی ڈی اے نے کہاکہ جس نے بھی غلطی کی بطور سربراہ پوری ذمہ داری لیتاہوں،اشتہارمیں غلطی کی تحقیقات بھی کروں گا۔ جسٹس عامر فاروق نے چیئرمین سی ڈی اے سے استفسارکیا کہ عدالت نے کون ساآرڈرپاس کیا تھا،چیئرمین سی ڈی اے نے کہا کہ عدالت نے آرڈر پاس نہیں کیاتھا جو اشتہار میں شائع ہوا۔چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد نے حکم نامہ کی غلط تشریح کرنے کی ذمہ د اری قبول کر تے ہوئے عدالت سے غیر مشروط معافی مانگ لی،عدالت نے چیئرمین سی ڈی اے عامر علی احمد کو تصحیح شائع کرنے کی ہدایت کردی،اسلام آبادہائیکورٹ نے چیئرمین سی ڈی اے کیخلاف توہین عدالت کیس نمٹا دیا۔

چیئرمین سی ڈی اے

مزید : علاقائی