رانجھا صاحب آپ کو زیرسماعت مقدمے پر بات کرنے سے روکاتھا،کیوں نہ آپ کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے،اسلام آبادہائیکورٹ

رانجھا صاحب آپ کو زیرسماعت مقدمے پر بات کرنے سے روکاتھا،کیوں نہ آپ کیخلاف ...
رانجھا صاحب آپ کو زیرسماعت مقدمے پر بات کرنے سے روکاتھا،کیوں نہ آپ کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے،اسلام آبادہائیکورٹ

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ میں زیر التواءمقدمے پر بیان بازی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ رانجھا صاحب آپ کو زیر سماعت مقدمے پر بات کرنے سے روکا تھا، آپ نے کہا کہ عدالت نے کہا کہ صدر مملکت کا مواخذہ کیا جاسکتا ہے،چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ نے استفسار کیا کہ عدالت نے کب ایسا بیان دیا ہے؟کیوں نہ آپ کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں زیر التواءمقدمے پر بیان بازی سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کیس کی سماعت کی،رہنما مسلم لیگ ن محسن شاہنواز رانجھا اسلام آباد ہائی کورٹ میں پیش ہوئے،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ رانجھا صاحب آپ کو زیر سماعت مقدمے پر بات کرنے سے روکا تھا، جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ آپ نے کہا کہ عدالت نے کہا کہ صدر مملکت کا مواخذہ کیا جاسکتا ہے، چیف جسٹس اسلام آبادہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ عدالت نے کب ایسا بیان دیا ہے؟

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ کیوں نہ آپ کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کی جائے،لیگی رہنما محسن شاہ نوازرانجھا نے کہا کہ معذرت چاہتا ہوں آئندہ ایسا نہیں ہوگا،چیف جسٹس نے کہا کہ چلیں دیکھتے ہیں کیاہوتا ہے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد