’حکومت نے فیس سیونگ بھی نہیں دی اس لیے مولانا2 چار دن احتجاج کریں گے اور۔۔۔ ‘ سینئر صحافی عامر خاکوانی نے منصوبہ بندی واضح کردی

’حکومت نے فیس سیونگ بھی نہیں دی اس لیے مولانا2 چار دن احتجاج کریں گے اور۔۔۔ ‘ ...
’حکومت نے فیس سیونگ بھی نہیں دی اس لیے مولانا2 چار دن احتجاج کریں گے اور۔۔۔ ‘ سینئر صحافی عامر خاکوانی نے منصوبہ بندی واضح کردی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و کالم نویس عامر خاکوانی نے دعویٰ کیا ہے کہ حکومت نے مولانا فضل الرحمان کو فیس سیونگ بھی نہیں دی جس کے باعث وہ 2 چار روز مختلف شہروں میں احتجاج کریں گے اور پھر کہانی ختم ہوجائے گی۔

عامر خاکوانی نے فیس بک پر اپنی پوسٹ میں لکھا ’ صحافتی حلقوں میں یہی بات چل رہی ہے کہ مولانا کا دھرنا ختم ہوگیا، کراچی ، لاہور کے صحافی یہی خبر دے رہے ہیں کہ مولانا کو فیس سیونگ بھی حکومت نے نہیں دی اور اب پلان بی کے نام پر اسلام آباد کا دھرنا بند اور دو چار دنوں کے لئے مختلف شہروں میں سڑکیں بند ، ہلکا پھلکا احتجاج اور بس کہانی ختم۔‘

عامر خاکوانی نے جے یو آئی کے کارکنوں سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے کہا ’ عظیم الشان مارچ، تاریخ ساز دھرنا اپنے منطقی انجام کو پہنچا، مولانا کے پرجوش حامیوں سے البتہ تعزیت بنتی ہے۔‘

اس سے قبل اپنی ایک پوسٹ میں عامر خاکوانی نے مولانا فضل الرحمان کے پلان بی کے حوالے سے لکھا تھا کہ ’ مولانا فضل الرحمن کا پلان بی تصادم، خون خرابے اور لاشیں گرانے کی خواہش لگ رہا ہے۔لگتا یہی ہے کہ مولانا کا دھرنا چونکہ بری طرح ناکام رہا ہے، چودہ دن گزارنے کے باوجود وہ کچھ بھی نہیں کر پا رہے، کچھ ہونے کے امکانات بھی نظر نہیں آرہے۔ اپنی شدید فرسٹریشن میں مولانا اب ملکی نظام درہم برہم کرنا چاہ رہے ہیں۔ یہ صریحاً غلط اور جنون ہے۔‘

عامر خاکوانی کے مطابق مولانا فضل الرحمان کو یہ سمجھ نہیں آ رہی کہ اہم شاہراہیں بند کر کے ، شہروں میں ٹریفک جام کر کے وہ عوام کی نفرت اور ناپسندیدگی کا نشانہ ہی بنیں گے۔ اس سے کچھ حاصل نہیں ہوسکتا۔ یہی خادم رضوی نے کیا تھا اور نقصان یہ ہوا کہ جب اس کے خلاف قانونی کارروائی ہوئی تو کوئی ایک فرد بھی اس کے لئے کھڑا نہ ہوا۔مولانا بھی اسی ڈگر پر چل رہے ہیں۔ اللہ رحم فرمائے۔ ان کے حامیوں کو ان سے سوال کرنا چاہیے کہ پرامن مارچ، پرامن احتجاج کا دعویٰ اور اب یہ سڑکیں بند کرنا، شہر بند کر دینا، یہ کھلا تضاد نہیں؟

مزید : سیاست /علاقائی /پنجاب /لاہور