خیبر پی کے، ایف سی کےلئے 2سال سے کوئی جدید ہتھیار نہیں خریدے گئے، قائم کمیٹی

خیبر پی کے، ایف سی کےلئے 2سال سے کوئی جدید ہتھیار نہیں خریدے گئے، قائم کمیٹی

اسلام آباد(ثناءنیوز) صوبہ خیبر پختونخوا کی حفاطت پر مامور فرنٹیئر کانسٹیبلری کیلئے گزشتہ دو سالوں سے کوئی جدید خود کارہتھیار خریدے گئے ہیں نہ نفری میں کمی کو پورا کرنے کے لئے سمری پر کوئی توجہ دی جاسکی ہے گورنر و وزیر اعلی خیبر پختونخوا بھی وزیر اعظم کو ان کے حالیہ دورہ کے موقع پر اس مسئلے جس کے کے باعث صوبے میں امن و امن کی صورتحال سنگین اور بگڑتی جارہی ہے سے پوری طرح آگاہ کرسکے۔ جب کہ اس مسئلے پر دو سمریز وزیر اعظم آفس میں پڑی ہیں ۔سنگین صورتحال کے پیش نظر سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ امور نے وزیراعظم کو وزارت داخلہ کی متذکرہ مسئلے پر دونوں سمریوں کی فوری منظوری کی سفارش بھجوادی ہے۔ حکومت کو وفاقی دارالحکومت اسلام سے ملحقہ خیبرپختونخوا کے علاقوں بالخصوص کوہستان، بابوسر اور واخان کی طویل پٹی پر موثر انداز میں بارڈر سکیورٹی فورسز کے مسلسل گشت کےلئے ان فورسز کو مضبوط بنانے سے متعلق سفارشات بھی بھجوادی گئی ۔

مزید : علاقائی


loading...