داعش کیخلاف آپریشن پر یومیہ76لاکھ ڈالر خرچ ہو رہے ہیں ، امریکہ

داعش کیخلاف آپریشن پر یومیہ76لاکھ ڈالر خرچ ہو رہے ہیں ، امریکہ

                          واشنگٹن(این این آئی +آن لائن) امریکہ نے کہا ہے کہ داعش کے خلاف فوجی آپریشن پر روزآنہ کم سے کم 76 لاکھ ڈالر خرچ ہورہے ہیں ¾ پنٹاگون کے اعدادو شما رکے مطابق عراق اور شام میں داعش کے خلاف امریکی فضائی آپریشن پر اخراجات کا تخمینہ 76 لاکھ سے ایک کروڑ ڈالرز یومیہ ہے۔ اعداد و شمار کے مطابق 8 اگست سے 2 اکتوبر تک فضائی آپریشن پر 42 کروڑ 40 لاکھ ڈالر خرچ ہوچکے ہیں ۔ محکمہ دفاع کے حکام نے پہلی بار اس بات کی بھی تصدیق کی کہ داعش کے خلاف آپریشن میں دیگر لڑاکا طیاروں کے ساتھ اے سی 130 گن شپ بھی استعمال کیے جارہے ہیں ۔آن لائن کے مطابق امریکی وزیر دفاع چک ہیگل نے کوبانی کی جنگ کو انتہائی مشکل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسلامک اسٹیٹ کے خلاف جاری یہ مہم طویل المدتی ہو گی۔ اس شامی کرد علاقے میں جاری لڑائی کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد پانچ سو سے تجاوز کر گئی ہے۔ بر طا نو ی خبر رساں ادارے نے امریکی وزیر دفاع چک ہیگل کے حوالے سے بتایا ہے کہ امریکی فضائیہ کی طرف سے اسلامک اسٹیٹ کے جنگجوو¿ں کی خلاف کی جانے والی کارروائیوں کی وجہ سے کچھ فائدہ ضرور ہوا ہے لیکن یہ مشن آسان نہیں ہوگا۔ چلی کے دارالحکومت سانتیاگو میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ آئی ایس آئی ایس کو شکست دینے کے لیے ہم سے جو کچھ ہو سکتا ہے، ہم وہ فضائی حملوں کے ذریعے کر رہے ہیں۔ حقیقت میں ان فضائی حملوں سے کچھ پیشرفت ہوئی ہے۔“ تاہم انہوں نے کوبانی کی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے تسلیم کیا کہ یہ ایک مشکل کام ہے۔ترکی کی سرحد سے متصل شامی کرد علاقے کوبانی میں اسلامک اسٹیٹ کے جہادیوں کے خلاف نبرد آزما کرد فائٹرز نے امریکا اور اس کے عرب اتحادی ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ ان انتہا پسندوں کے خلاف اپنے حملوں میں تیزی لائیں۔ کوبانی کے ایک اہلکار ادریس نشان کے مطابق ہتھیاروں کی کمی کہ وجہ سے وہ جہادیوں کے خلاف کوئی بڑی کامیابی حاصل نہیں کر سکتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسلامک اسٹیٹ کے پاس ٹینک اور بھاری اسلحہ ہے جبکہ وہ کلاشنکوفوں اور گولیوں سے ان کا مقابلہ کر رہے ہیں۔اطلاعات کے مطابق کوبانی کا مکمل محاصرہ کیے ہوئے جہادی سست مگر مسلسل پیشقدمی جاری رکھے ہوئے ہیں۔ سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق جہادیوں کی سست روی کی وجہ امریکی فضائی حملے ہی ہیں۔

ادھرآبزرویٹری نے بتایا کہ کوبانی پر کنٹرول کے لیے جہادیوں کے ایک بڑے حملے کو ناکام بنا دیا گیا ہے۔ اسلاملک اسٹیٹ کے جنگجوو¿ں نے ہفتے کو کوبانی پر حملہ کیا لیکن نوے منٹ کی خونریز لڑائی کے بعد وہ پسپا ہو گئے۔ آبزرویٹری نے کہا ہے کہ کوبانی کی جنگ میں ہلاک شدگان کی تعداد پانچ سو سے متجاوز ہو گئی ہے۔ ان ہلاک شدگان میں اسلامک اسٹیٹ کے 298 جنگجو بھی شامل ہیں۔ جہادیوں نے سولہ ستمبر کو کوبانی پر حملہ کیا تھا۔

مزید : عالمی منظر