ناقص حکومتی پالیسیاں ، آئل ملز انڈسٹریتباہ ، مالکان کو سکتہ ، مزدور دربدر

ناقص حکومتی پالیسیاں ، آئل ملز انڈسٹریتباہ ، مالکان کو سکتہ ، مزدور دربدر

صادق آباد ( نمائندہ پاکستان ) ناقص پالیسیوں کے سبب آئل ملز انڈسٹری تباہی کے دہانی تک پہنچ گئی ۔ تحصیل صاد ق آباد میں 57میں سے 7آئل ملز چل رہی ہیں ۔کھل بنولہ پر فی من 90(بقیہ نمبر53صفحہ12پر )

سے 100روپے ٹیکس عائد کرنا تباہی کا سبب بنا ۔ 6روپے فی من سے بڑھا کر 100روپے ٹیکس فی من سمجھ سے باہر ہے ۔ تحریک انصاف کی حکومت اس سلسلے میں آئل ملز کو تباہی سے بچانے کیلئے ٹھو س اقدا مات اٹھائے ۔ صاد ق آبا د میں 50آئل ملز بند ہونے کے سبب 1500افراد بے روزگا رہوئے جسکی ذمہ داری حکومت پر عائد ہوتی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار صدر آئل ملز ایسوسی ایشن چوہدری جاوید ارشد نے اخبار نویسیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ مارکیٹ میں ملاوٹ شدہ کھل مکسنگ کیساتھ کھلے عام فروخت ہو رہی ہے اور حکومتی ذمہ داران غفلت کی نیند سو رہے ہیں ۔ یہ ظالمانہ اقدامات مسلم لیگ ن کی حکومت میں کیے گئے تھے ۔ مرکزی سطح پر ہمارے سربراہان کے وفود حکومت کیساتھ مذاکرات کر رہے ہیں۔ ناجائز ٹیکس کی بدولت آئل ملز انڈسٹری زبوں حالی کا شکار ہو گئی ہے۔

مزدور دربدر

مزید : ملتان صفحہ آخر