ناراض بیوی کو منانے کیلئے خاوند نے سیشن عدالت میں ہاتھ جوڑ دیئے،بیوی نہ مانی

ناراض بیوی کو منانے کیلئے خاوند نے سیشن عدالت میں ہاتھ جوڑ دیئے،بیوی نہ مانی

لاہور(نامہ نگار )سیشن عدالت میں ناراض بیوی کو منانے کے لئے خاوند نے ہاتھ جوڑ دیئے ،مگر 25 سال پرانے جوڑے میں صلح نہ ہو سکی ،عدالت نے 15 اکتوبر تک میاں بیوں کو صلح کی مزید مہلت دیتے ہوئے قراردیا کہ بچوں کی حوالگی کا فیصلہ ہونے یا نہ ہونے کے بعد کیا جائے گا۔سیشن عدالت نے 25 سال پرانے جوڑے کو صلح کی مزید مہلت دے دی سیشن عدالت۔میں پانچ بچوں کی حوالگی کیس کی سیشن عدالت میں سماعت ہوئی ،عبداللہ ٹاؤن ٹھوکر نیاز بیگ کی رہائشی رانی بی بی نے اپنے 5بچوں کی خاوند سے بازیابی کے لئے درخواست دائر کی تھی ،عدالت کے حکم پر بچے اور خاوند کو عدالت میں پیش کردیا گیا،خاوند محمد صادق بیوی سے عدالت میں ہاتھ جوڑ کر معافی مانگتا رہا مگر بیوی نے اسے معاف نہیں کیا ،خاتون کا کہنا ہے کہ شادی کو 25سال ہو گئے ، خاوند بار بار مارتا پیٹتا ہے اور پھر معافی مانگ لیتاہے ،اس نے زندگی کو کھیل بنایا ہوا ہے ،عدالت نے میاں بیوی ہدایت کی کہ والدین کو بچوں کی خاطر سمجھوتہ کر لینا چاہے۔

،عدالت نے کہا آپ کو مہلت دی جا رہی ہے کہ 15 اکتوبر تک سمجھوتہ کرلیں، وگرنہ آپ کے بچے تقسیم ہو جائیں گے ۔عدالت نے عارضی طور 18 سالہ بچی شازیہ، 8 سالہ بچی لائبہ اور 9 سالہ بچہ رضوان ماں کے حوالے کر دیئے جبکہ 15 سالہ عمران اور 10 سالہ عرفان عارضی طور پر والد کے حوالے کرتے ہوئے میاں بیوی کو صلح کے لئے 15 اکتوبر کودوبارہ بچوں سمیت طلب کرلیا ہے۔

مزید : علاقائی