اندرون شہر تجاوزات ا ورگندگی ختم کی جائے، جسٹس علی اکبر قریشی

اندرون شہر تجاوزات ا ورگندگی ختم کی جائے، جسٹس علی اکبر قریشی

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اندرون شہر عمارتوں، بادشاہی مسجد ،شاہی قلعہ اور علامہ اقبال مزار کو اصل حالت میں بحال کرنے کے لیے دائر درخواست پر والڈ سٹی اتھارٹی اور پنجاب حکومت سے ایک ہفتے میں وضاحت طلب کرلی،فاضل جج نے مزید حکم دیا کہ اندرون شہر ،بادشاہی مسجد اور علامہ اقبال مزار کے ارد گرد تجاوزات اور گندگی کے ڈھیر وں کو فوری ختم کیاجائے ،انہوں نے خبردار کیا کہ عدالتی حکم کی تعمیل نہ کرنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے گی ۔فاضل جج نے والڈ سٹی اتھارٹی کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے 2رکنی کمشن بھی تشکیل دے دیاہے۔درخواست گزار اظہر صدیق نے موقف اختیار کیا کہ اندرون شہر میں غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے ،تاریخی گھروں کی مرمت بھی میرٹ پر نہیں ہوئی جبکہ شاہی قلعہ،بادشاہی مسجد اور علامہ اقبال کے مزار کو بھی اصل حالت میں بحال کیا جارہا ہے اور نہ ہی ان تاریخی مقامات کے ارد گرد تجاوزات کو ختم کیاگیا ہے،دوران سماعت والڈ سٹی اتھارٹی حکام نے عدالت کو بتایاکہ غیر قانونی تعمیرات کرنے والوں کے خلاف کاروائی کا سلسلہ جاری ہے ،اندرون شہر کو صاف ستھرا بنانے کے لئے روزانہ کی بنیاد پر اقدامات کئے جارہے ہیں ،عدالت نے والڈ سٹی اتھارٹی کے بیان کے بعد ان کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے کمشن تشکیل دے دیا،کمشن ایڈووکیٹ اظہر صدیق اور اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب عمر فاروق پر مشتمل ہوگا ،کمشن والڈ سٹی اتھارٹی کی جانب سے اندرون شہر میں غیر قانونی تعمیرات کرنے والوں کے خلاف کاروائی کا جائزہ لے گا ۔کمیشن والڈ سٹی اتھارٹی کی جانب سے 5کروڑو روپے خرچ کرکے مرمت کئے گئے گھروں کا بھی جائزہ لے گا ،فاضل جج نے قرار دیا کہ اندرون شہر میں غیر قانونی تعمیرات کسی صورت برداشت نہیں کریں گے ۔

جسٹس علی اکبر قریشی

مزید : علاقائی