آزادی مارچ میں شرکت سے روکنے کیلئے منصوبہ بنایا جا رہا ہے‘ جمشید دستی

آزادی مارچ میں شرکت سے روکنے کیلئے منصوبہ بنایا جا رہا ہے‘ جمشید دستی

  

چوک مہرپور(نمائندہ پاکستان) حکومت اپنی غلط پالیسیوں کے باعث مکمل طور پر ناکام ہوچکی،غریب کے منہ سے نوالہ چھین لیا گیا،50 لاکھ گھر دینے کے دعویدار حکمران غریبوں کے سر سے چھت تک چھین رہے ہیں،پارٹی کی سنٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے فیصلہ کے مطابق عوامی راج پارٹی کا وفد مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ میں شرکت کرے گا،حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہے۔ان خیالات کا اظہار پاکستان عوامی راج پارٹی کے سربراہ جمشید احمد خان دستی نے ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے(بقیہ نمبر29صفحہ12پر)

کہا کہ میں نے ہمیشہ مثبت سیاست کی،اسمبلی کے اندر یا باہر غریبوں کے حقوق کے حصول کی خاطر آواز اٹھائی جس کی وجہ سے ملک کے غریب کسان مزدور مجھ سے محبت کرتے ہیں، موجودہ حکومت نے برسراقتدار آتے ہی غریبوں پر ظلم کرنا شروع کئے،ٹبہ کریم آباد،بہاری کالونی،بلال نگر میں غریبوں کے مکانات گرانا شروع کردئیے تھے جس پر میں غریبوں کی چیخ و پکار پر وہاں پہنچا تھا اور پولیس نے میرے خلاف 16 ایم پی او کا جھوٹا مقدمہ درج کرایا تھا جس کی میں نے عبوری ضمانت کرا رکھی ہے،ڈی پی او مظفرگڑھ ہنگامی طور پر لاہور سے مظفرگڑھ پہنچے،ڈی ایس پیز کی چھٹیاں منسوخ کی گئیں اور مجھے آزادی مارچ سے روکنے کے لئے اوچھے ہتھکنڈوں کا سہارا لیا جارہا ہے،اس لئے ان افیسرز کو پیغام دینا چاہتا ہوں کہ حکومت کے ایما پر کسی بھی غیر قانونی اقدام سے باز رہیں بصورت دیگر قبر تک پیچھا کروں گا،انہوں نے کہا کہ طلباء اور غرباء کیلئے چلائی جانے والی فری بسوں کو بند کرنے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے۔

جمشید دستی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -