فیصل آباد،سیاسی رنجش پر 2گروہوں میں فائرنگ،3افراد ہلاک،مقدمات درج

فیصل آباد،سیاسی رنجش پر 2گروہوں میں فائرنگ،3افراد ہلاک،مقدمات درج

  

فیصل آباد(کرائم رپورٹر)سابق ایم این اے چوہدری الیاس جٹ مرحوم کے داماد ڈاکٹر نثار جٹ اوربھتیجے عبدالرحمن کی سیاسی مخالفت بالآخر ذاتی دشمنی میں تبدیل ہو گئی۔ گذشتہ روز ہونے والی لڑائی کے نتیجہ میں سابق ایم این اے و پی ٹی آئی کے رہنما ڈاکٹر نثار جٹ کے دو سکیورٹی گارڈ اور مخالف کزن عبدالرحمان قتل ہو گئے۔ دونوں فریقین نے ایک دوسرے کے خلاف قتل اور دیگر مختلف دفعات کے تحت مقدمات درج کرا دیئے ہیں۔ مقتول عبدالرحمان کے قتل کے مقدمہ میں ڈاکٹر نثار جٹ کو بھی ملزم نامزد کیا گیا ہے۔ اس دشمنی کا پس منظر چوہدری الیاس جٹ مرحوم کی سیاسی وراثت بھی بتایا جا رہا ہے۔ حالیہ جنرل الیکشن میں چوہدری نثار جٹ پی ٹی آئی کی طرف سے حلقہ این اے 106سے امیدوار تھے ان کا مقابلہ رانا ثناء اللہ سے تھا جس میں رانا ثناء اللہ جیت گئے اس قومی حلقہ کے زیریں ایک صوبائی حلقہ میں عبدالرحمن بھی امیدوار تھے جن کو جیپ کا نشان الاٹ ہوا تھا کہا جا رہا ہے کہ عبدالرحمان کی ہمدردیاں رانا ثناء اللہ کے ساتھ تھیں ا س طرح ایک دوسرے کی سیاسی مخالفت میں بڑی شدت پائی جاتی تھی اور چوہدری الیاس جٹ کی سیاسی وراثت دو حصوں میں تقسیم ہو کر ایک دوسرے کے سامنے آگئی تھی اور ذاتی دشمنی بن چکی تھی۔ جہاں تک واقعات کا تعلقات کا تعلق ہے تو اس بارے میں چک نمبر66ج۔ ب دھاندرہ کے رہائشی زاہد مجید نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ محبوب منیر احمد‘محمد ایوب‘ عباس علی اور محمد طیب گاڑی پر شہر جا رہے تھے کہ موتی سائیں دربار کے قریب ملزمان عزیز الرحمان عرف عبدالرحمان‘گوہر ریاض‘ بلال چیمہ‘ وارث مسیح‘ محمد باسط‘وسیم اور دو نامعلوم افراد نے سیاسی رنجش پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجہ میں محبوب منیر احمد‘محمد ایوب اور عباس طیب زخمی ہو گئے جن کو شدید زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کیا جا رہا تھا کہ محبوب اور اس کا بھائی محمد ایوب راستہ میں ہی دم توڑ گئے۔ جبکہ فائرنگ کے تبادلہ کے دوران مرحوم الیاس جٹ کے بھتیجا عبدالرحمن بھی زخمی ہو گیا۔ جو شیخوپورہ میں دم توڑ گیا مقتول عبدالرحمن کی بہن سدرہ نے اپنے بیان میں پولیس کو بتایا کہ ملزمان محمد ایوب‘عباس علی‘محمد طیب‘ ڈاکٹر نثار احمد اور چار نامعلوم افراد نے سیاسی مخالفت کی بناء پر اس کے بھائی عبدالرحمان کو موتی سائیں دربار کے قریب شیخوپورہ جاتے ہوئے فائرنگ کر کے زخمی کر دیا اس کو شدید زخمی حالت میں شیخوپورہ ہسپتال منتقل کیا جا رہا تھا کہ وہ راستہ میں ہی دم توڑ گیا پولیس نے دونوں پارٹیوں کے خلاف مقدمات درج کرتے ہوئے مقتول عبدالرحمان کے قریبی ساتھی اور عینی شاہد ملزم باسط کو گرفتار کر لیا۔ دریں اثناء قتل ہونے والے دونوں سکیورٹی گارڈ بھائیوں کو گذشتہ روز نماز عصر کے بعد آبائی گاؤں میں سپرد خاک کر دیا گیا۔

مقدمات درج

مزید :

صفحہ آخر -