چناری کے مقام پر کشمیریوں کا دھرنا اور قافلوں کی آمد جاری

 چناری کے مقام پر کشمیریوں کا دھرنا اور قافلوں کی آمد جاری

  

چناری(آن لائن)جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے چناری اور چکوٹھی کے درمیان جکسوال کے مقام پر جاری احتجاجی دھر نا کو ایک ہفتہ مکمل ہو گیا ہے جبکہ نئے قافلوں کی آمد کا سلسلہ  بھی جاری ہے۔ جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے صدر ڈاکٹر توقیر گیلانی نے احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے حکومت آزاد کشمیر کو کنٹینر ہٹانے کے لیے تین دن کی ڈیڈ لائن دیدی۔ پیر کی شام تک کنٹینر نہ ہٹائے گئے تو لبریشن فرنٹ کے کارکن منگل کے روز کنٹینر دریائے برد کر کے لائن آف کنٹرول چکوٹھی کی طرف مارچ شروع کر دیں گے۔ انتظامیہ نے چکوٹھی اور گردونواح کے عوام سے روڈ کھلوانے کے لیے دو دن کی مہلت طلب کر لی آزاد کشمیر کے ایڈووکیٹ جنرل کرم داد خان ایڈووکیٹ اپنے عہدہ سے مستعفی ہو کر اظہار یکجہتی کے لیے دھرنا میں پہنچ گئے۔تفصیلات کے مطابق لبریشن فرنٹ کا دھرنا ساتویں روز بھی جاری رہا بھارتی چوکیوں کے سامنے بھارت مخالف اور تحریک آزادی کشمیر کے حق میں شرکاء کے فلگ شگاف نعرے بازی سرحد پار بھارتی مورچوں سے ٹکرانے لگی۔ ضلع جہلم ویلی سمیت آزاد کشمیر کے مختلف علاقوں سے دھر نا میں شرکت کے لیے آنے والے قافلوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔طلبہ نعرے بازی کر کے ماحول گرماتے رہے۔ لبریشن فرنٹ کے کارکنوں کے ساتھ ساتھ پولیس کی بھاری نفری بھی گذشتہ سات روز سے شدید سردی میں  چنوئیاں،بھرائیاں کے مقام پر پڑاؤ ڈالے ہوئے ہے۔

چناری دھرنا

مزید :

صفحہ اول -