پاکستان سے سعودی عرب اور ایران کے درمیان ثالثی کی درخواست کس نے کی ؟ وزیراعظم عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس میں اعلان کر دیا

پاکستان سے سعودی عرب اور ایران کے درمیان ثالثی کی درخواست کس نے کی ؟ وزیراعظم ...
پاکستان سے سعودی عرب اور ایران کے درمیان ثالثی کی درخواست کس نے کی ؟ وزیراعظم عمران خان نے مشترکہ پریس کانفرنس میں اعلان کر دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان اس وقت ایران کے دورہ پر ہیں جہاں انہوں نے ایرانی صدر حسن روحانی سے ملاقات کی اور اس دوران وفود کی سطح پر مذاکرات بھی کیے گئے جس کے بعد وزیراعظم اور حسن روحانی نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا ۔

مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہناتھا کہ سعودی عر ب اور ایران کے درمیان ہمیں ثالثی کا کسی نے نہیں کہا ہے بلکہ یہ پاکستان کا اپنا فیصلہ ہے ، ہم ثالث نہیں سہولت کار کا کردار ادا کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ صدر ٹرمپ نے ایران امریکہ میں بات چیت کیلئے سہولت کاری کیلئے کہا ۔ وزیراعظم کا کہناتھا کہ دورہ امریکہ کے دوران ایران کشیدگی پر بات ہوئی تھی ، امریکہ کے ساتھ مذاکرات کیلئے ہر ممکن مدد کریں گے ۔عمران خان کا کہناتھا کہ ہم کسی قسم کی جارحیت کی حمایت نہیں کریں گے ، خطے میں کسی قسم کا تنازعہ نہیں چاہتے اور ایران آنے کا مقصد بھی یہی ہے ۔

عمران خان کا کہناتھا کہ سعودی عر ب اور ایران کے معاملات کافی پیچیدہ ہیں جوکہ خطے میں امن کے لیے ناگزیر ہیں۔سعودی عرب اور ایران کے تنازع کو سنجیدگی سے دیکھ رہے ہیں۔ سعودی عرب اور ایران تنازعہ سے خطے میں غربت میں اضافہ ہو گا۔ پاکستان کی بھی تنازع کی حمایت نہیں کرے گا،مسائل کا حل مذاکرات سے نکالا جا سکتا ہے۔ مخالفین چاہتے ہیں سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہو۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان خطے میں مزید جنگ نہیں چاہتا۔ایران اور سعودی میں ثالثی کے لیے کسی نے نہیں کہا بلکہ یہ پاکستان کا اپنا فیصلہ ہے۔

مزید : اہم خبریں /قومی