ایرانی آئل ٹینکر کونشانہ بنائے جانے کے بعدامریکہ بھی میدان میں آگیا، سعودی عرب کیلئے بڑااعلان کردیا

ایرانی آئل ٹینکر کونشانہ بنائے جانے کے بعدامریکہ بھی میدان میں آگیا، سعودی ...
ایرانی آئل ٹینکر کونشانہ بنائے جانے کے بعدامریکہ بھی میدان میں آگیا، سعودی عرب کیلئے بڑااعلان کردیا

  



واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز ایران کے ایک آئل ٹینکر کو سعودی عرب کی سمندری حدود میں جدہ سے صرف60میل کے فاصلے پر دو میزائلوں سے ٹارگٹ کیا گیا۔ اس واقعے کے فوری بعد امریکہ نے ایک ایسا اقدام اٹھا لیا ہے کہ خطے میں جنگ کا خطرہ سر پر منڈلاتا نظر آنے لگا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق ایرانی آئل ٹینکر کو نشانہ بنائے جانے کے فوری بعد امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ نے سعودی عرب میں ایف 15جنگی طیاروں کے دو سکوارڈن، ایئرڈیفنس سسٹمز اور مزید امریکی فوجی دستے تعینات کر دیئے ہیں۔ امریکہ کا یہ اقدام ایران اور سعودی عرب کے مابین تعلقات میں کشیدگی کا پتا دے رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں اضافی فوج، جنگی طیارے اور دیگر جنگی سامان بھیجنے کے بعد صدر ٹرمپ کی طرف سے ایک بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ ”ہم سعودی عرب کے لیے یہ سب کچھ مفت میں نہیں کر رہے۔ وہ ہمیں اس کے لیے رقم دے رہا ہے۔“رپورٹ کے مطابق دیگر حربی سامان کے ساتھ 1800مزید فوجی سعودی عرب بھیجے گئے ہیں اور پہلے سے موجود امریکی فوجیوں کے سعودی عرب میں قیام کی مدت بھی بڑھا دی گئی ہے۔واضح رہے کہ تاحال ایرانی آئل ٹینکر پر حملے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی اور نہ ہی ایران کی طرف سے کسی پر کوئی الزام عائد کیا گیا ہے۔ ایران کا کہنا ہے کہ یہ ایک دہشت گردانہ کارروائی تھی۔

مزید : بین الاقوامی