سانحہ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم کے ہوشرباانکشافات 

سانحہ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم کے ہوشرباانکشافات 
سانحہ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم کے ہوشرباانکشافات 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کے تفتیش میں ہوشربا انکشافات ، موٹروے پر گاڑی کھڑی دیکھی تو خاتون کی گاڑی کا شیشہ توڑ کر باہر نکالا اور نیچے لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنا یا۔ 

نجی چینل جیو نیوز کے مطابق دوران تفتیش موٹروے کیس کے مرکزی ملزم نے ہوشربا انکشافات کیے ہیں۔ ملزم نے انکشاف کیا ہے کہ میں شفقت اور بالا مستری 9ستمبرکو واردات کے لیے کورول گاﺅں سے نکلے، بالا مستری راستے سے واپس چلا گی،میں اورشفقت جنگل کی طرف چلے گئے ۔ کورول جنگل کے قریب دو  تین ٹرالی ڈرائیوروں سے ڈکیتی کی وارداتیں کیں۔ عابد ملہی نے انکشاف کیا کہ کچھ دیر بعد گاڑی کے جلتے بجھتے انڈیکیٹر دیکھ کر موٹروے کے اوپر چلے گئے ، کھڑی گاڑی میں خاتون کو باہر نکلنے کا کہا ،خاتون کے انکار پر گاڑی کا شیشہ توڑا اور خاتون کو زبردستی باہر نکالا۔ خاتون سے گھڑی ، زیورات اور نقدی لوٹنے کے بعد موٹروے سے نیچے جانے کو کہا، انکار پر بچوں کو کو نیچے لے گئے، خاتون بچوں کو بچانے آئی تو زبردستی زیادتی کا نشانہ بنا یا، جب ڈولفن اہلکاروں نے آکر فائرنگ کی تو فرار ہوگئے ۔

عابدملہی کا کہنا تھا کہ واردات کے بعد میں ننکانہ صاحب اور شفقت دیپالپور چلا گیا تھا۔ میں ننکانہ صاحب سے بہاولپور چلا گیا جہاں ماسک پہن کر گھومتا رہا۔ ایک ماہ تک پبلک ٹرانسپورٹ سے مختلف شہروں میں گھومتا رہا۔ اس نے بتایا کہ پیسے ختم ہونے پر بیوی سے رابطہ کیا تو پولیس نے مجھے گرفتارکرلیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -