کاہنہ، گرلز کالج پر غنڈوں کا حملہ: چوکیدار پر تشدد، اساتذہ، طالبات کو ہراساں کرتے رہے، 5ملزمان گرفتار، باقی فرار 

کاہنہ، گرلز کالج پر غنڈوں کا حملہ: چوکیدار پر تشدد، اساتذہ، طالبات کو ہراساں ...

  

کاہنہ (نامہ نگار)گرلز کالج پر غنڈوں کا حملہ  حملہ آوروں میں دو پولیس ملازمین بھی شامل ہیں درجن بھر افراد زبردستی کالج کا گیٹ کھول کر اندر داخل  ہوئے اور پرنسپل کو آفس میں بند کردیا اور فی میل ٹیچنگ سٹاف طالبات کو ہراساں کرتے رہے۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز گورنمنٹ کالج کاہنہ نو میں  30:12ایک نامعلوم شخص کالج گیٹ پر آیا اور موٹر سائیکل کھڑی کر دی جس کو چوکیدار اشفاق نے راستہ چھوڑ کر کھڑے ہونے کا کہا تو وہ طیش میں آگیا اور محمد اشفاق اور اس کے ساتھی صداقت علی پر تشدد شروع کر دیا اور ٹیلی فون کرکے مزید درجن بھر سے زائد افراد کو بلا لیا اور زبردستی گیٹ کھول کر کالج کے اندر داخل ہو کر پرنسپل سمیت دوسری خواتین اساتذہ اور طالبات کوہراساں کرتے رہے  اس دوران انہوں نے ایک سٹاف ممبر مس طیبہ ضیاع کو تھپڑ مارے اور دھکا دے کر زمین پر گرایا جس پر اس کی گردن پر چوٹیں آئیں جس پر پورے کالج میں خوف و ہراس پھیل گیا اور طالبات خوفزدہ ہو کر اپنے آپ کو کلاسرومز میں بند کر لیا اسی دوران پرنسپل نے 15پر کال کر کے پولیس بلالی جس نے ان میں سے 5 افراد کو موقع پر گرفتار کر لیا اور باقی فرار ہوگئے مقدمہ میں نامزد ملزمان احمد، راحت عالی، نعمان، عثمان، طالب اور دس نا معلوم افراد شامل ہیں نامزد ملزمان میں دو پولیس اہلکار احمد ولد عبدالمجید اور طالب ولد عبدالحمید شامل ہیں۔ علاقے کی سیا سی سماجی اور مذہبی تنظیموں نے اس غنڈہ غردی کی شدید مزمت کی اور ملزمان کے خلاف  سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ 

مزید :

علاقائی -