گوجرانوالہ،پی ڈی ایم کے جلسے کی تیاریاں،پولیس کا اپوزیشن کی کارنر میٹنگز پر دھاوا،کئی عہدیدار زیر حراست

گوجرانوالہ،پی ڈی ایم کے جلسے کی تیاریاں،پولیس کا اپوزیشن کی کارنر میٹنگز پر ...

  

 گوجرانوالہ (شبیر حسین مغل سے))گوجرانوالہ میں 16اکتوبرکواپوزیشن جماعتوں کے حکومت کیخلاف کیے جانیوالے جلسے کی تیاریاں عروج پر ہیں اوراس کیلئے باقاعدہ طورپر پہلے سے طے شدہ ماسٹرپلان پرپوری طرح عملدرآمدکروایاجارہا ہے اوراس ضمن میں حالیہ ایام میں مرکزی لیگی رہنمااوربعض ممبران اسمبلی مختلف جگہوں پر منعقدہ اجتماعات میں حکومت مخالف تقریریں کرکے سیاسی میدان کوخوب گرمارہے ہیں اورمسلم لیگ (ن)کیساتھ ساتھ مولانافضل الرحمن کی جماعت‘جمعیت علمائے اسلام اورپیپلزپارٹی کی قیادت وجیالے بھی جلسے کی کامیابی کیلئے بڑی تیاریوں میں مصروف عمل ہیں،دوسری جانب پی ڈی ایم کے جلسہ کے سلسلہ میں ہونیوالی مسلم لیگ(ن)اور پیپلز پارٹی کی کارنر میٹنگز پولیس نے رکوا دیں۔میٹنگز والے علاقوں میں پولیس کی نفری بھی تعینات رہی۔پیپلز پارٹی کے ٹکٹ ہولڈر اشفاق باجوہ کے زیر اہتمام گرجاکھ میں ہونے والی کارنر میٹنگز پولیس نے شروع ہونے سے پہلے ہی رکوا دی اور جائنٹ سیکرٹری صابر باجوہ کو حراست میں لے لیا جسے دو گھنٹے بعد چھوڑا گیا۔جبکہ مسلم لیگ (ن)کامران خالد بٹ،اور مظفر چاند کے زیر نگرانی مختلف علاقوں میں ہونے والی میٹنگز کو پولیس نے رکوا دیا اور وہاں آنے والے کارکنوں کو واپس بھجوا دیا۔مسلم لیگ(ن)کے سینئر نائب صدر اور پیپلز پارٹی سیکرٹری اطلاعات صغیر بٹ نے کارنر میٹنگز رکوانے اور صابر باجوہ کی گرفتاری کی پرزور مذمت کی ہے۔انہوں نے کہا کہ سولہ اکتوبر کو گوجرانوالہ میں پی ڈی ایم کا جلسہ ہر صورت ہوگا۔کارکن ان اوچھے ہتکھنڈوں سے ڈرنے والے نہیں ہیں۔ادھر پولیس کے ترجمان کے مطابق ڈپٹی کمشنر سے اجازت لے کر کارنر میٹنگ کی جا سکتی ہے،کیونکہ کورونا ایس او پیز پر عمل درآمد بھی ضروری ہے، اور شہریوں کی زندگیوں کو کسی بھی موذی مرض سے بچانا بھی انتہائی اہم ہے، ترجمان کے مطابق گوجرانولہ میں کسی بھی سیاسی کارکن کو گرفتار نہیں کیا گیا ارو نہ ہی کسی سیاسی کارکن کو ہراساں کیا گیا ہے، اور نہ ہی کوئی پکڑ دھکڑ کی جا رہی ہے، ترجمان کے مطابق ڈپٹی کمشنر دفتر میں کورونا پھیلنے کے حوالے سے ایک اہم اجلاس ہوا ہے جس میں تمام سرکاری اداروں کو کورونا سے بچاؤ کیلئے ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرنے کی ہدایت کی گئی ہے، اجلاس میں بزنس کمیونٹی کے عہدیدار بھی موجوتھے، جب کہ سی پی او سرفراز فلکی نے اس صورتحال کے بعد اپنے دفتر کے تمام عملے اور تمام ایس ایچ اوز کو بھی کورونا بارے ایس اوپیز پر عمل درآمد کرنے کی ہدایت جاری کر دی ہے۔خصوصی ذرائع کے مطابق مسلم لیگ کی مرکزی قیادت اوراپوزیشن کی تمام متحدہ جماعتیں جلسے کوکامیاب کروانے کیلئے ہرممکن حدتک زور لگارہی ہیں اوراس سلسلہ میں مسلم لیگ ن کئی بڑے لیڈر اوراعلی قیادت مسلسل کئی روز سے یہاں ڈیرے ڈالے ہوئے ہے اورکارکنوں کوبڑی تعداد میں جلسہ گاہ میں لانے کیلئے باقائدہ طورپر ایک خاص ترتیب دیئے گئے پروگرام پرعمل پیرا ہیں موجودہ دنوں میں مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر راناثناء اللہ‘پرویزرشید‘دانیال عزیز‘مریم اورنگزیب‘خرم دستگیر خان‘عمران خالد بٹ‘عثمان ابراہیم اوردیگر لیڈران کارنرمیٹنگ اوردیگر مختلف طریقوں سے کارکنوں کے اجتماعات سے نہ صرف خطاب کررہے ہیں بلکہ انہیں جلسے کوکامیابی سے ہمکنارکروانے کیلئے خاص قسم کی ہدایات بھی جاری کررہے ہیں۔ 16اکتوبر کودونوں سیاسی پارٹیوں کے آمنے سامنے ہونے پرکسی بڑے تصادم کا اندیشہ بھی ہے اوراس سے ضلعی انتظامیہ اورپولیس کے افسران خاصے پریشانی میں مبتلا دکھائی دیتے ہیں مگرگزشتہ روز پی ٹی آئی کی ضلعی اورسٹی تنظیم نے 16اکتوبرکوریلی نکالنے سے انکارکردیا ہے اورموقف اختیار کیا ہے کہ اگرریلی نکالنے کاپارٹی قیادت حکم دیگی تو پھرہی عمل ہوگا اورضلعی انتظامیہ کی جانب سے جناح سٹیڈیم میں جلسے کی اجازت نہ ملنے کی صورت میں مسلم لیگ اوردیگراپوزیشن جماعتیں جی ٹی روڈ پرہی جلسہ کرنے کااعلان کررہی ہیں جبکہ بڑے جلسے کی صورت میں یہاں کرونا وائرس کے دوبارہ پھیلنے کے خدشات بھی منڈلارہے ہیں۔علاوہ ازیں تحریک استقلال کو بھی بحال کردیا گیا ہے۔ ایگزیکٹو کونسل نے سابق وفاقی وزیر سید نصرت علی شاہ کو صدر اور گوجرانوالہ سے مرزاعزت بیگ کو پارٹی کا مرکزی سیکرٹری جنرل نامزد کردیا ہے۔ تحریک استقلال کے مرکزی سیکرٹری جنرل مرزا عزت بیگ نے کہا ہے کہ تحریک استقلال پی ٹی آئی سے علیحدہ ہوگئی ہے اور اب تحریک استقلال اپنے منشور کے مطابق کام کریگی۔

اپوزیشن کا جلسہ 

مزید :

صفحہ اول -