سول سیکرٹریٹ نامنظور‘ حکومت صوبہ بنانے کا اعلان کرے‘ مقررین

سول سیکرٹریٹ نامنظور‘ حکومت صوبہ بنانے کا اعلان کرے‘ مقررین

  

ملتان (سٹی رپورٹر) سول سیکرٹریٹ نہیں‘ صوبہ چاہئے، وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کا یہ کہنا کہ صوبائی دارالحکومت کا فیصلہ آنے والی اسمبلی کرے گی، ان خیالات کا(بقیہ نمبر71صفحہ 7پر)

 اظہار سرائیکستان صوبہ محاذ کی طرف سے منعقد کئے گئے سیمینار کے موقع پر کیا گیا۔ یہ سیمینار سرائیکستان صوبہ محاذ کے چیئرمین خواجہ غلام فرید کوریجہ کی اہلیہ کی تعزیت اور صوبہ سرائیکستان کے قیام کے سلسلے میں منعقد ہوا، سیمینار سے خواجہ غلام فرید کوریجہ، بابو نفیس انصاری، ظہور دھریجہ، بریگیڈیئر قیصر مہے، میاں عامر نقشبندی،مہر مظہر کات، شریف خان لشاری، سابق اٹارنی جنرل شوکت بلال بنگیش ایڈووکیٹ، سید مہدی الحسن شاہ، پیر ضیا الدین قریشی، حاجی عبدالغفور گھنڈ، سید غلام علی شاہ، خواجہ شعیب الحسن،شکونتلا دیوی، ملک جاوید چنڑ، سید اختر گیلانی، شاہد کھاکھی، ملک عماد،غلام عباس، ندیم خان لشاری،ضیغم عباس قریشی، حاجی عید احمد دھریجہ، محمد زبیر دھریجہ، مصطفی عزیز،اشرف پٹھانے خان،ثوبیہ ملک، محمد بخش براٹھا، مولانا عاقب، حافظ واقف ملتانی، انتھونی مسیح، امتیاز حسین،محمد رمضان انصاری، ڈاکٹر خالد اقبال، لیاقت قریشی،سردار ایوب خان رند، مہر ملازم حسین ہانسلہ و دیگر نے خطاب کیا۔ نظامت کے فرائض رانا ذیشان نون نے سر انجام دیئے۔ خواجہ غلام فرید کوریجہ نے کہا کہ ہمارا سلوگن ہے کہ ”خوشی ہو یا غم، وسیب کے حقوق کا ذکر ہو ہر دم“۔ اس کے ساتھ ہمارا یہ بھی نعرہ ہے کہ ”صوبہ سرائیکستان مرکز ملتان“۔ انہوں نے کہا کہ ہم پاکستان میں قوموں کے حقوق چاہتے ہیں اور اقلیتوں کے حقوق کا مکمل تحفظ ہمارے منشور میں شامل ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما و سابق ایم پی اے بابو نفیس انصاری نے کہا کہ حکومت سرائیکی صوبے کا بل اسمبلی میں لائے، پیپلز پارٹی بھرپور حمایت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف جان بوجھ کر لیت و لعل سے کام لے رہی ہے۔ پیپلز پارٹی نے سینیٹ سے دو تہائی اکثریت کے ساتھ سرائیکی صوبے کا بل پاس کرایا، تحریک انصاف میں سچائی ہے تو اس عمل کو آگے بڑھائے کہ سینیٹ کے بل کی منظوری سے سرائیکی صوبے کو ایک لحاظ سے آئینی تحفظ حاصل ہو چکا ہے۔ ظہور دھریجہ نے کہا کہ حکمرانوں نے سول سیکرٹریٹ نہیں صوبے کا وعدہ کیا تھا، صوبہ نہ بنایا گیا تو آئین کی شق 62، 63 کے تحت صادق اور امین نہ رہیں گے اور ان پر نا اہلی کا قانون نافذ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سرائیکی صوبہ نوشتہ دیوار ہے، صوبے کے قیام کو دنیا کی کوئی طاقت نہیں روک سکتی، حکمرانوں کو چاہئے کہ وہ فوری  طور پر صوبے کا قیام عمل میں لائیں۔ تحریک آواز ملتان کے چیئرمین بریگیڈیئر قیصر عباس مہے نے کہا کہ میں جنوبی پنجاب نہیں بلکہ وسیب کی شناخت کے مطابق صوبے کا قیام اور صوبائی دارالحکومت ملتان چاہتا ہوں۔ مہر مظہر کات نے کہا کہ جھنگ کے لوگ ہمیشہ سے سرائیکی صوبے کا حصہ ہیں اور ہمیشہ حصہ رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے جھنگ میں صوبہ سرائیکستان کیلئے مظاہرے کئے تو وہاں بھونچال آیا ہوا ہے۔ میاں عامر نقشبندی، صاحبزادہ ضیا الدین قریشی و دیگر نے وسیب کی تمام جماعتوں اور تمام طبقات کو متحد ہو کر صوبے کیلئے جدوجہد کرنے کا مشورہ دیا۔ آخر میں خواجہ غلام فرید کوریجہ کی اہلیہ کے لئے فاتحہ اور مغفرت کی دعا کی گئی۔ 

مقررین

مزید :

ملتان صفحہ آخر -