چارسدہ میں زینب زیادتی اور قتل کیس کا ملزم گرفتار

چارسدہ میں زینب زیادتی اور قتل کیس کا ملزم گرفتار

  

 چارسدہ (بیورورپورٹ)چارسدہ کے علاقہ شیخ کلی سے 6اکتوبر کو ڈھائی سالہ بچی زینب کے اغواء، جنسی زیادتی اور قتل کیس میں ملوث ملزم کو پولیس نے گرفتار کر لیا۔ ملزم نے اقرار جرم کرلیا۔ صوبائی حکومت کی طرف سے متاثرہ خاندان کو قانونی معاونت فراہم کی جائے گی۔ صوبائی وزراء کامران بنگش،سلطان محمد خان اور ڈی پی او چارسدہ کی بڑی پریس کانفرنس۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر اطلاعات کامران بنگش،صوبائی وزیر قانون سلطان محمد خان اور ڈی پی او چارسدہ محمد شعیب خان نے پولیس سیکرٹریٹ میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پولیس نے چھ اکتوبر کو شیخ کلی سے ڈھائی سالہ بچی زینب کے ساتھ جنسی زیادتی اور قتل میں ملوث ملزم کو گرفتار کر لیاہے۔ملزم کا نام لعل محمد عرف بڈا ولد فضل محمد ہے جس کی عمر 45سے 50سال کے درمیان ہے۔ سفاک ملزم کا تعلق زینب ہی کے گاؤں شیخ کلی سے ہے۔ پولیس نے ملز م کی نشاندہی پر آلہ قتل درانتی اور بچی کے جوتے بھی برآمد کر لئے۔ سفاک ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف کر لیا ہے اور ایف آئی آر میں بچی سے جنسی زیادتی اور قتل کی دفعات کا اضافہ بھی کیا گیاہے۔ شیخ کلی سے اغواء ہونے والی ڈھائی سالہ بچی زینب کی نعش پولیس کو 7اکتوبر کو جبہ کورونہ سے برآمد ہوئی تھی۔ تھانہ پڑانگ میں پہلے ہی روز بچی کی اغواء کی رپورٹ درج ہو ئی جس کے بعد  چارسدہ پولیس کی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم تشکیل دی گئی تھی۔ جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم نے 388مکانات کی پروفائلنگ کر کے 70مشتبہ افراد گرفتار کر لئے تھے۔بچی کے پوسٹمارٹم کے بعد ڈی این اے نمونے لیبارٹری بھجوائے گئے ہیں اور پوسٹ مارٹم کے دوران بچی سے جنسی زیادتی کی تصدیق بھی ہوئی تھی۔ملزم کے خلاف تھانہ پڑانگ میں اغواء قتل، جنسی زیادتی اور چائلڈ پروٹیکشن ایکٹ کے تحت مقدمات رجسٹرڈ کئے گئے ہیں۔ پریس کانفرنس میں صوبائی وزراء نے چارسدہ اور ریجنل پولیس کو خراج تحسین پیش کیا اور واشگاف الفاظ میں کہا کہ صوبائی حکومت متاثرہ خاندان کو قانونی معاونت فراہم کرکے ملزم کو قرار واقعی سزا دے گی۔ڈی پی او چارسدہ محمد شعیب خان کے مطابق گرفتار ملزم لعل محمد عرف بڈا ذہنی طور پر پسماندہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملزم سے تفتیش جاری ہے۔ملزم کو آج بروز منگل مقامی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔ 

مزید :

صفحہ اول -