کرپٹ حکومت کو رکھنا تباہ کن،ان کو جانا پڑے گا:شاہد خاقان عباسی

کرپٹ حکومت کو رکھنا تباہ کن،ان کو جانا پڑے گا:شاہد خاقان عباسی

  

  کراچی(اسٹاف رپورٹر)سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے کہ عمران خان پریشان ہیں اس لئے کہتے ہیں فوج ہمارے ساتھ ہے،جو شخص جمہوری عمل سے نہیں آتا وہ ہمیشہ یہ دعوی کرتا ہے کہ جمہوری عمل سے آیا ہوں، سرکاری افسروں کو بلا کر ہمارے خلاف مقدے درج کرائے گئے، نیب کے کیسز اب پیچھے رہ گئے اب تو غداری کے مقدمات بن رہے ہیں،ہم پر غداری کے پرچے کٹ سکتے ہیں توان پر بھی آئین سے انحراف کا پرچہ ہونا چاہئے، نیب یکطرفہ احتساب کررہاہے، پاکستان اورنیب اکٹھے نہیں چل سکتے،نیب چلائیں یا پاکستان چلائیں، اب عدالتیں بھی کہہ رہی ہیں نیب سیاسی انجینئرنگ کر رہا ہے، وفاق سندھ کے جزائرلوٹنا چاہتا ہے۔پیرکوکراچی کی احتساب عدالت میں پی ایس او میں غیرقانونی بھرتیوں کے کیس میں سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور دیگر ملزمان عدالت میں پیش ہوئے،عدالت نے بغیر کارروائی کے سماعت 2 نومبر تک ملتوی کردی۔عدالت کے باہرمیڈیا سے گفتگو میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ  آج پھر نیب عدالت میں پیشی تھی اور حسب معمول کیس نہیں چلا، ہمارے کیسز میں کرپشن نہیں اختیارات کے ناجائز استعمال کا ذکرہے، عدالت کے پوچھنے پر بھی نیب جرم ثابت نہیں کرسکا، سرکاری افسروں کو بلا کر ہمارے خلاف مقدمے درج کرائے گئے، نیب کے کیسز اب پیچھے رہ گئے اب تو غداری کے مقدمات بن رہے ہیں۔سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ نیب یکطرفہ احتساب کررہا ہے اورسیاسی مخالفین کو دبانے کیلئے استعمال ہو رہا ہے، خود عدالتیں کہہ رہی ہیں کہ نیب پولیٹیکل انجینئرنگ کررہاہے، بد نصیبی ہے یہ ایسا ادارہ ہے جس کے بارے میں اعلی عدالتوں کی آبزرویشن آچکی ہے، حکومت یا پاکستان کو چلائے گی یا نیب کو چلائے گی، پاکستان اور نیب اکٹھے نہیں چل سکتے۔شاہدخاقان عباسی نے کہاکہ ہمارا وزیر اعظم بے خبر آدمی ہے انہیں پرچون کا علم نہیں چینی کی قیمت تک کا علم نہیں، عمران خان خود کو جمہوریت سمجھتے ہیں،یہ پریشان ہیں اس لئے کہتے ہیں کہ فوج ہمارے ساتھ ہے۔عمران خان کو معلوم ہونا چاہیے کہ فوج ہمیشہ منتخب حکومت کے ساتھ ہوتی ہے کیوں کہ وہ ایک آئینی ادارہ ہے۔انہوں نے کہاکہ جو شخص جمہوری عمل سے نہیں آیا اسے کہنے کی ضرورت نہیں پڑتی کہ میں جمہوریت ہوں، میں بھی ایک پرچہ درج کرانا چاہتا ہوں،ایک آدمی عمران خان ہے جس نے آئین کا حلف اٹھایا ہے اور جھوٹے مقدمات بنواتا ہے۔سابق وزیراعظم نے کہا کہ حکومت اب سندھ کے جزیرے لوٹنا چاہتی ہے، پورے ملک میں تماشا لگا ہوا ہے۔ ہمارے کیسز میں کرپشن کا نہیں اختیارات کے ناجائزاستعمال کا ذکرہے۔ پاکستان اورنیب اکٹھے نہیں چل سکتے، ملک کے آدھے سیاستدانوں پرتوغداری کے مقدمے درج کئے گئے ہیں۔ کرپٹ حکومت کو رکھنا تباہ کن ہے،ان کو جانا پڑے گا۔

مزید :

صفحہ اول -