واحد قومی نصاب تعلیمی مسائل کا حل نہیں،نرگس علوی

واحد قومی نصاب تعلیمی مسائل کا حل نہیں،نرگس علوی

  

کراچی (پ ر) ایک ملک ہونے کے باوجود پاکستان میں کئی طرح کے تعلیمی نظام لاگو ہیں جن سے طبقاتی سوچ پروان چڑھی۔یکساں تعلیم نظام اور یکساں نصاب کی اہمیت کو دیکھتے ہوئے حال ہی میں حکومت نے واحد قومی نصاب نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو کہ حوصلہ افزا ہے۔ تاہم اس اقدام کے حوالے سے تعلیمی ماہرین مختلف خدشات کا اظہار کررہے ہیں۔ اس موضوع کو تفصیل سے سمجھنے اور حکومت کو بہتر و مفصل تجاویز و آراء  پیش کرنے کے لیے ہمدرد فاؤنڈیشن کی جانب سے ہمدرد کارپوریٹ ہیڈ آفس میں شوریٰ ہمدرد کا انعقاد کیا گیا جس میں ماہر تعلیم اور اراکین شوریٰ نے اپنی رائے کا اظہار کیا۔مہمان مقرر، ممتاز ماہر تعلیم نرگس علوی نے کہا واحد قومی نصاب میں پہلے تو یہ طے ہونا چاہیے کہ کس زبان میں تعلیم دی جائے گی۔ کیونکہ اردو سے بچہ جلد سمجھ جائے گا لیکن انگریزی کی بھی اپنی افادیت ہے اور پوری دنیا میں انگریزی کو پرائمری سے پڑھایا جارہا ہے۔اس لئے تعلیم تو اردو زبان میں دینی چاہیے اور انگریزی کو پہلی جماعت سے پڑھایا جانا چاہیے۔ سماج میں طبقاتی فرق کو کم سے کم کرنے کے لیے بھی ایک قومی نصاب ہونا چاہیے۔لیکن بڑے پرائیوٹ اسکولز تو پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ کیمبرج سسٹم ویسے ہی رہے گا اور حکومت اْن کی بات مان چکی ہے۔ پھر جو طالب علم ا?غا خان بورڈ کے تحت تعلیم حاصل کررہے ہیں وہ تو دیگر بچوں کے مقابلے زیادہ بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔ حالانکہ ا?غا خان بورڈ تو حکومت کا نافذ نصاب ہی پڑھارہا ہے لیکن چونکہ اساتذہ اچھے ہیں اور بچوں کو سہولیات بھی میسرا?تی ہیں۔ ایسا ماحول ملتا ہے جو سیکھنے سوچنے سمجھنے کو جلابخشتا ہے۔ اس لیے صرف نصاب ہی نہیں بلکہ تعلیم کے معیار کو بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔ اصل مسئلہ گلی کوچوں میں کھلے پرائیوٹ اسکولز اور مدارس کے طالب علموں کا ہے کیونکہ انہیں اچھی تعلیم نہیں دی جاتی۔ ان اسکولوں میں اساتذہ کا معیار نہیں ہے اور نہ ہی ایسا ماحول بنانے پر توجہ دی جاتی ہے جس سے بچے سیکھیں اور مفید شہری بنیں۔ چناچہ یہ ضروری ہے کہ اساتذہ کی تربیت ہو، پھر اْن کی مانیٹرنگ ہواور اْنہیں پرکھا جائے۔ اگر کوئی کمی بیشی ہو تو اْسے درست کیا جائے۔ صدر شوریٰ ہمدرد محترمہ سعدیہ راشد نے اس موقع پر اسپیکر شوریٰ جسٹس ریٹائرڈ حاذق الخیری کی ذوجہ کے انتقال اور رکن شوریٰ ہمدرد ہما بیگ کے نوجوان صاحب زاد ے کی شہادت پر گہرے افسوس و رنج کا اظہار کرتے ہوئے اْن کے بلند درجات کے لیے دعا کی۔ ہما بیگ کے صاحب زادیکچھ عرصہ پہلے پی ا?ئی اے ہوائی جہاز حادثے میں شہید ہوئے تھے۔

مزید :

صفحہ آخر -