عالمی تاجر پاکستان میں انوسٹمنٹ کے مواقع تلاش کرینگے:عمر ایوب

عالمی تاجر پاکستان میں انوسٹمنٹ کے مواقع تلاش کرینگے:عمر ایوب

  

 اسلام آ باد (آ ئی این پی) وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان  نے کہا ہے کہ پاکستان گیس کی درآمد کے لئے گیس پائپ لائن کا بنیادی ڈھانچہ تشکیل دے رہا ہے تاکہ ملک میں طلب و رسد کے مابین پائے جانے والے فرق کو پورا کیا جاسکے،حکومت نے نجی شعبے کو سوئی کمپنیوں کے گیس نیٹ ورک کو تھرڈ پارٹی ایکسیس کے ذریعے استعمال کرنے میں حصہ لینے کی اجازت دی ہے جس کے تحت نجی شعبہ ایل این جی درآمد کرسکتا ہے، امیدہے کہ بین الاقوامی سرمایہ کار پاکستان کے ایل این جی سیکٹر میں اوپن مارکیٹ کی پالیسی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے، سرمایہ کاری اور کاروباری مواقع تلاش کریں گے۔پیر کووفاقی وزیر برائے توانائی  عمر ایوب خان نے ویڈیو لنک کے ذریعے جاپان میں ہونے والی ایل این جی پروڈیوسر صارف  کانفرنس 2020  کے حاضرین سے  خطاب کیا۔ اپنے اہم خطاب میں  وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان ایک گیس پیدا کرنے والا ملک تھا جس کی یومیہ پیداوار 4 ارب مکعب فٹ سے زیادہ ہے (بی سی ایف ڈی)، جو اپنی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے کافی ہے۔ تاہم، گزشتہ دو دہائیوں سے، پاکستان کو سالانہ اوسطا پیداوار میں 5فیصد کی کمی اور گھریلو اور تجارتی شعبے کی مانگ میں مستحکم نمو کی وجہ سے گیس کی فراہمی کی کمی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔  انہوں نے کہا کہ پاکستان گیس کی درآمد کے لئے گیس پائپ لائن کا بنیادی ڈھانچہ تشکیل دے رہا ہے تاکہ ملک میں طلب و رسد کے مابین پائے جانے والے فرق کو پورا کیا جاسکے۔ وزیر موصوف نے ملک میں مستقبل میں گیس کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے لئے ایل این جی سیکٹر میں نجی شعبے کے نقش کو بڑھاوا دینے کے لئے موجودہ حکومت کے کلیدی اقدام پر سامعین کو اپ ڈیٹ کیا۔ 

عمر ایوب 

مزید :

صفحہ آخر -