پارا چنار،پرائمری سکول دراوی کے والدین اور طلبہ کا احتجاجی مظاہرہ

پارا چنار،پرائمری سکول دراوی کے والدین اور طلبہ کا احتجاجی مظاہرہ

  

پاراچنار(نمائندہ پاکستان)گورنمنٹ پرائمری سکول دراوی کے طلبہ اور والدین نے سکول میں اساتذہ اور دیگر سہولیات  نہ ہونے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اور حکومت سے فوری طور سکول کو عملہ اور دیگر سہولیات فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے پاراچنار کے نواحی علاقے شلوزان دراوی سکول کے بچوں اور والدین اور قبائلی عمائدین سمیت پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا علاقہ دراوی کے بچوں، والدین اور عمائدین سید امیر میاں، سید دین شاہ، سید سجاد حسین، نجات حسین، علی افضل، سید محمد اور دیگر  نے کہا کہ علاقہ شلوزان دراوی میں 1972 میں قائم ہونے والا واحد پرائمری سکول تمام تر سہولیات سے محروم ہے سکول میں تقریبا دو سو کے قریب بچے اور بچیاں تعلیم حاصل کرتے ہیں اور سکول کیلئے صرف ایک استاد موجود ہے جس کے باعث بچے پڑھائی سے محروم ہیں اور ان کا قیمتی وقت ضائع ہورہا ہے والدین اور عمائدین نے کہا کہ کورونا سے قبل سکول میں تین اساتذہ پڑھاتے تھے مگر اس دوران دو اساتذہ کو سکول سے تبدیل کردئیے گئے جس کے باعث سکول کے بچے پڑھائی سے محروم ہوگئے ہیں انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ایجوکیشن آفیسر ضلع کرم اور دیگر متعلقہ حکام کو بار بار مسائل کے حوالے سے آگاہ کیا مگر کسی قسم شنوائی نہیں ہورہی انہوں نے کہا کہ  حکومت کی تعلیمی ترقی کے بلند بانگ دعوے صرف نعروں اور اشتہارات تک محدود ہیں عمائدین اور والدین نے وزیر تعلیم خیبر پختونخوا شہرام ترکئی اور دیگر متعلقہ حکام سے شلوزان دراوی سکول کو فوری طور سٹاف کی فراہمی اور دیگر مسائل کے حل کیلئے اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -