طورخم، خوگہ خیل قوم کا این ایل سی کیخلاف احتجاجی دھرناآج 14ویں روز بھی جاری

    طورخم، خوگہ خیل قوم کا این ایل سی کیخلاف احتجاجی دھرناآج 14ویں روز بھی جاری

  

خیبر(بیورورپورٹ)طورخم بارڈر پر خوگہ خیل قوم کا این ایل سی حکام کے خلاف احتجاجی دھرناآج 14ویں روز بھی جاری رہا۔ اس موقع پر احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے سرکردہ مشر برکت اللہ شینواری،جے یو آئی کے رہنماء قاری نظیم گل شینواری اور پی پی پی کے رہنماء شاہ رحمان شینواری نے کہا کہ طورخم بارڈر پر این ایل سی حکام خوگہ خیل قوم کے ساتھ کئے گئے جون 2015کے معاہدے کی خلاف ورزی کررہے 24 فیصد آمدنی پر قوم کے ساتھ معاہدے پر عمل کرائے اور قوم کے اراضی پر ناجائز قبضہ سے باز رہے جو کہ خوگہ خیل قوم کے ساتھ زیادتی اور ظلم ہے انہوں نے کہا کہ 17 اکتوبر تک این ایل سی حکام قوم کے ساتھ300کنال زمین کی حد برداری کی تعین کرے اور قوم کو ساڑھے 24فیصد کا حصہ دیا جائے جو جون 2015کے معاہدے میں ان کے ساتھ ہوئے ہیں ان پر عملدرآمد کیا جائے اور ٹرمینل پر کام بند کیا جائے جب تک زمین کی حد برداری معلوم نہ ہوئی اس وقت تک مذکورہ اراضی پر تعمیراتی کام کو بند کردیاجائے آخر میں انہوں نے کور کمانڈر پشاور،آئی جی ایف سی اور ایف بی آر کے اعلی حکام سے مطالبہ کیا کہ طورخم بارڈر پر خوگہ خیل قوم اور این ایل سی حکام کے درمیان مزکورہ مسئلہ کو پر امن طریقے سے حل کرنے کے لئے عملی اقدامات کرے واضح رہے کہ قوم خوگا خیل کے سینکڑوں لوگوں نے لنڈی کوتل بازار سے جاتے ہوئے طورخم پہنچ گئے اور NLC پر حدبرداری معلوم کرنے تک کام بند کردیاگیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -