بٹ خیلہ،لیویز فورس کی  کارروائی، 34 اشتہاری گرفتار

  بٹ خیلہ،لیویز فورس کی  کارروائی، 34 اشتہاری گرفتار

  

بٹ خیلہ(بیورورپورٹ) تحصیل درگئی میں منشیات فروشی سمیت دیگر جرائم میں ملوث عناصر کے خلاف مختلف کاروائیوں کے دوران لیویز پوسٹ درگئی نے34اشتہاری گرفتار کرلئے۔گذشتہ چند مہینوں کے دوران مختلف کاروائیوں میں لیویز تھانہ درگئی نے 12954گرام چرس، 62لیٹر شراب، 757گرام ہیروئن اور 38گرام آئیس،پانچ عدد کلاشنکوف اور چوری شدہ موٹر سائیکل بر آمد کرکے چار ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔ لیویز پوسٹ درگئی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر درگئی محب اللہ خان، صوبیدار تھانہ درگئی صاحب رحیم خان اور صوبیدار تھانہ کوپر ظاہر شاہ خان نے کہا کہ ضلع ملاکنڈ اور بالخصوص تحصیل درگئی کو منشیات فروشی، جواء بازی اور دیگر جرائم سے پاک کرنے کا تہیہ کر رکھا ہے اور اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر ملاکنڈ ریحان گل خٹک اور دیگر اعلیٰ حکام نے جرائم پیشہ افراد کے خلاف بھر پور اپریشن کرنے کے ہدایات جاری کئے ہیں۔ اسسٹنٹ کمشنر محب اللہ خان نے کہا کہ منشیات دھندے میں ملوث افراد ملک و قوم اور نئی نسل کے دشمن ہیں جن سے کسی قسم کی رعایت نہیں برتی جائیگی۔ انہوں نے کہا کہ تحصیل درگئی کو منشیات فروشی اور دیگر جرائم سے پاک کرنے کی غرض سے مختلف کاروائیوں میں اب تک تھانہ درگئی نے 12954گرام چرس، 62لیٹر شراب، 757گرام ہیروئن اور 38گرام آئیس،پانچ عدد کلاشنکوف، اکتیس پستول، کارتوس، ایک موٹر کار اور چوری شدہ  9عدد موٹر سائیکل اورایک رکشہ بر آمد کرکے چار ملزمان اور 34اشتہاریوں کو گرفتار کر لیا ہے۔انہوں نے کہا کہ تھانہ کوپر نے اب تک 2400گرام چرس، دس لیٹر شراب،پانچ عدد پستول، کارتوس، 5عدد موٹر سائیکل بر آمد کرنے سمیت 7اشتہاری ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا جبکہ دس منشیات فروشوں کو تھری ایم پی او کے تحت جیل بھیج دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ لیویز پوسٹ سخاکوٹ نے اب تک 26362گرام چرس، 54لیٹر شراب، 76گرام ہیروئن اور 151گرام آئیس برامد کر لئے ہیں۔تھانہ قائد آباد نے اب تک 1518گرام چرس برا مد کرلئے ہیں۔ پریس کانفرنس کے موقع پر ظفر علی باچہ، آئی ایچ سی امتیاز احمد اور جعفر خان بھی موجود تھے۔ اسسٹنٹ کمشنر درگئی محب اللہ خان نے اس موقع پر چاروں تھانوں کی تفصیلی رپورٹ پیش کی اور تھانوں کے انچارجز کو ہدایات دئیے کہ منشیات سمیت دیگر جرائم میں ملوث عناصر کے خلاف کاروائیاں مذید تیز کریں۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -