(ن) لیگ کا یوم سیاہ‘ ملتان سمیت مختلف شہروں میں ریلیاں‘مظاہرے

(ن) لیگ کا یوم سیاہ‘ ملتان سمیت مختلف شہروں میں ریلیاں‘مظاہرے

  

 ملتان+ ڈیرہ + چوٹی زیریں‘ لودھراں  (خصوصی رپورٹر‘ سٹی رپورٹر‘ نمائندہ پاکستان‘نامہ نگار) مسلم لیگ (ن) ملتان کے زیر اہتمام نواں شہر چوک پر یوم سیاہ کی تقریب منعقد شہر بھر سمیت مسلم لیگ (ن) کے کئی رہنماؤں کے گھروں کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات تمام تر رکاوٹوں اور پولیس کے ناکوں کے باوجود مسلم لیگ ن ملتان کے زیر اہتمام یوم سیاہ منایا گیا۔سینئر سیاست دان مخدوم جاوید ہاشمی کے گھر کے باہر پولیس آنے پر مخدوم جاوید ہاشمی خود ہی گھر سے باہر آگئے تفصیل کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مرکزی قیادت کی ہدایت پر ملک بھر سمیت ملتان میں یوم سیاہ منایا گیا اس سلسلے میں ملتان کے مختلف علاقوں سے ن لیگی رہنما ؤں کی قیادت میں ریلیاں نکالی گئی جس میں لیگی کارکنوں نے کثیرتعداد میں شرکت کی اس موقع پر میاں نواز شریف، میاں شہباز شریف، حمزہ شہباز اور مریم نواز کے حق میں نعرتے لگائے گئے ریلی کے اختتام پر منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما مخدوم جاوید ہاشمی، سابق وفاقی وزیر سید جاوید علی شاہ، سابق ایم این اے و سابق مئیر شیخ طارق رشید، سابق ایم این اے ملک غفار ڈوگر، سابق صوبائی وزیر چوہدری عبدالوحید ارائیں، ٹکٹ ہولڈر رانا اقبال سراج سمیت سابق ارکان اسمبلی اور پارٹی عہدیداروں نے خطاب کیا۔جس میں مقررین نے کہا کہ زندہ دلان ملتان نے 12 اکتوبر کے دن یوم سیاہ کو یوم فتاح اور حکمرانوں کے لئے یوم شکست میں تبدیل کر دیا ہے۔ ہم موجودہ حکومت کو آج کے دن کا وقت دیتے ہیں کہ وہ پرویز مشرف کی عدالت کی جانب سے سزائے موت کے فیصلے پر عملدرآمد کرائے۔ مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ12اکتوبر کو پرویز مشرف نے ایک آئینی حکومت کا تختہ الٹا اور اس وقت کی بدترین آمریت میں عوام کے منتخب وزیراعظم میاں نواز شریف کو ناصرف ہتھکڑیاں لگائیں بلکہ انہیں چھ ماہ تک ایک کمرے میں پابند سلاسل رکھا۔ انہوں نے کہا کہ کارکن اب مسلم لیگ ن کے بڑے جلسوں کی تیاریاں کریں۔ ملک شدید مہنگائی اور چینی چوروں کی زد میں ہے۔ مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ میں ہمیشہ ہر مشکل میں نواز شریف کے ساتھ ہوتا ہوں، کل بھی نواز شریف کے ساتھ تھا اور آئندہ بھی انہی کے ساتھ رہوں گا۔ سید جاوید علی شاہ نے کہا کہ اگرچہ کمزور ترین جمہوریت مارشل لاء سے بہترہوتی ہے۔ لیکن سلیکٹڈ حکومت مارشل لاء سے بھی بدتر ہے۔ جس نے مہنگائی کے ذریعے غریبوں کا گلہ گھونٹ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف پر تنقید کرنے والے شیخ رشید کل تک نواز شریف کے گیت گاتے تھے۔ جاوید علی شاہ نے کہا کہ ہم نواز شریف کے ویڈیو لنک خطاب کے بیانیہ کو عوام کی آواز سمجھتے ہیں۔ ملتان کی ریلی بارش کا پہلا قطرہ ہے، قائدین کی رہائی تک جدوجہد جاری رہے گی۔ شیخ طارق رشید نے کہا کہ عوام نے ایک بار پھر ثابت کردیا ہے کہ ملتان مسلم لیگ ن کا گڑھ ہے۔ آنے والے بلدیاتی انتخابات اور خاص طور پر جنرل الیکشن میں ملتان کے عوام ووٹ کی پرچی کے ذریعے اپنا حق چھین لیں گے۔ انہوں نے مسلم لیگ ن کے کارکنوں، خواتین، وکلاء اور تمام ونگز کے عہدیداروں کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہمیں توقع ہے کہ مسلم لیگ ن کے کارکن اسی طرح متحد رہیں گے اور اپنی قیادت کو عوام میں لانے کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ رانا اقبال سراج نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملتان شہر کے علاوہ دیہی علاقوں سے بھی مسلم لیگ کے کارکن اپنی قیادت کی ایک کال پر تمام رکاوٹیں عبورکرکے چوک نواں شہر پہنچے ہیں۔ انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ حکومت نے مسلم لیگ ن کی پر امن ریلی کو روکنے کے لئے گھبرا کر قائدین کے گھروں کے باہر پولیس محاصرہ کروایا۔ لیکن میں کارکنوں اور قائدین کو سلام پیش کرتا ہوں کہ انہوں نے کمال جرأت کا مظاہرہ کیا اور رکاوٹیں عبور کرکے ریلی میں پہنچے، حکمران ایسے رویوں سے اجتناب کریں ورنہ دمام دم مست قلندر ہوگا۔ جبکہ عثمان خان بابر کی رہائش گاہ سے یوم سیاہ کے موقع پر نکالی گئی احتجاجی ریلی کی قیادت ٹکٹ ہولڈر ملک آصف رجوانہ،عثمان خان بابر نے کی،اس موقع پر لیگی ملک اعجاز رجوانہ،صنوبر رجوانہ،احسن رجوانہ،رفیق کریمی،احسن آرائیں،طلال صدیقی،عارف بدر قریشی،فاروق بھٹیودیگر رہنما ؤں کی بڑی تعداد شریک تھی،اس موقع پرملک آصف رجوانہ،عثمان خان بابر نے کہا کہ عوام تبدیلی سرکار کا نعرہ لگا کر اقدار پر قبضہ کرنے والوں سے تنگ آچکی ہے، مہنگائی اور بے روزگاری کی وجہ سے غریب عوام خودکشیوں، خود سوزیوں پر مجبور ہو رہے ہیں پوری قوم قائد میاں نواز شریف کے بیانیہ کے ساتھ کھڑی ہے لوگ ایک وقت کی روٹی کمانے سے قاصر ہیں گھر  وں میں فاقوں کی نوبت ہے اور حکومت نام کی کوئی چیز موجود نہ ہے اور قائد میاں محمد نواز شریف کا صرف اتنا  قصور ہے کہ اس نے ملک میں ترقیاتی کاموں کا جال بچھایااورملک کو اندھیروں سے نکالنے میں اپنا کردار ادا کیا،انہوں نے مطالبہ کیا کہ پارٹی ہمارے قائدشہباز شریف،حمزہ شہباز اور اپوزیشن رہنماؤں پر بے بنیاد مقدمات ختم کئے جائیں اور گرفتار لیگی ودیگر سیاسی رہنماؤں کو فی الفور رہا کیاجائے۔ دریں اثناء پاکستان مسلم لیگ ن کے زہراہتمام میاں شہباز شریف،حمزہ شہباز شریف کی ناجایز  گرفتاری اور بارہ  اکتوبر کا یوم سیاہ اور مہنگائی کے خلاف ٹریفک چوک پر فقید المثال احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر اور جنرل سیکرٹری پنجاب مسلم لیگ(ن) سردار اویس خان لغاری لغاری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 25 جولائی 2018 کو قائم ناجایز حکومت کے خلاف جدوجہد کا آغاز کر دیا ہے انہوں نے کہا چینی گھی آٹا بجلی گیس اور پٹرول مہنگا کرنے والوں سے جنگ ہے ملکی سالمیت اس کے استحکام کا عزم لے کر نکلے ہیں آج عوام نے چینی اٹا چوروں کے خلاف فیصلہ دے دیا ہے کٹھ پتلی سلکٹر حکومت کو جانا ہوگا سردار اویس خان لغاری نے کہا کہ نیازی حکومت نے عوام کا سکھ چین چھین لیا ہے آنا، ٹماٹر، چینی، گھی، بجلی،اور پٹرول ہماری گرفتاریوں سے اگر کم ہوتا ہے تو آو ہمیں گرفتار کرو انہوں نے آئی جی پنجاب اور آر پی او ڈیرہ غازی خان کو للکارتے ہوئے کہا کہ گرفتاری اور کرپشن کے پرچوں سے ہراساں نہیں کیا جا سکتا ہے عوام کے حقوق اور جمہوریت کی جدوجہد سے پیچھے نہیں ہٹیں گے انہوں نے کہا کہ بدترین جمہوریت بھی بہتر ہے آج ہم آمریت اور آمرانہ اقدار کے خلاف نکلے ہیں اپنی جدوجہد سے عوام کی خدمت کریں گے اور تبدیلی چوروں کے گرد گھیرا تنگ کر دیں گے ابھی تو فلم شروع ہوئی ہے اس کے بڑے ٹرالر جب گوجرانوالہ، کراچی، کوئٹہ، لاہور،ملتان مظفر گڑھ میں چلیں گے تو چور نیازی ٹولے کو بھاگنے کی جگہ نہیں ملے گی ہم نے پاکستان کے اداروں انکے کے استحکام کے لئے قربانیاں دی ہیں ہمارے بززگوں کی خدمات کا ثمر ہے کہ آج میں آزادی کا سورج طلوع ہوا مگر نیازی حکومت نے اس آزادی پر شب خون مارا ہے انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نے عوام کو لوٹ کر بھی ملکی قرضوں میں اضافہ ہی کیا ملکی معیشت تباہ کر دی ہم پر چوری اور غداری کے الزامات لگانے والو ہماری حب الوطنی گواہ ہے کہ ہم نے موٹر ویز اور جدید کارپیٹنگ سڑکیں بنائیں لوگوں کے لئے آسانیاں پیدا کیں آج لاہور کا سفر ساڑھے تین گھنٹے میں طے ہوتا ہے تو یہ کارنامے کس نے انجام دیئے نواز شریف وطن واپس آئیں گے اور جمہوریت کی جنگ کے سپاہ سالار بینں گے ملکی ترقی و استحکام اور اداروں کی حرمت و تقدس کے لئے پھر تبدیلی کے انقلاب کی راہ ہموار ہو چکی ہے انہوں نے ڈیرہ غازی خان کے مسائل پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ شہر میں گٹر ابل رہے ہیں سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں تھانے بک رہے ہیں پٹواری کل سے زیادہ آج پیسے کھا رہا ہے کیسا وزیر اعلی ہے کہ جہاں چوری ڈکیتی اور عوامی مسائل کا حل نہیں ہو پا رہا اگر پنجاب میں نواز لیگ کی حکومت ہوتی تو شہر کو بدلنے کے لئے ہمارا ایک مشیر ہی اہل ہوتا یہاں نااہلی اور نالائقی کی ایک بے ہودہ تاریخ رقم کرکے خوبصورت شہر کو تباہ کر دیا انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اس حکومت کے خاتمے تک نواز شریف کا ساتھ دیں گے جس پر عوام نے بھر یکجہتی کا اظہار کیا اور سردار اویس خان لغاری نے تقریر کے آخر میں مک گیا تیرا تیرا گو نیازی گو کے فلک شگاف نعرے بھی لگوائے دیگر مقررین جن میں سابق رکن صوبائی اسمبلی عبد العلیم شاہ نے پرجوش انداز میں مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے گو نیازی گو کے نعرے لگتے ہوئے کہا کہ 25 جولائی 2018 کو عوامی مینڈیٹ چوری ہوا تھا آج کے احتجاج نے ثابت کر دیا کہ نواز حکومت میں ماں بہن بیٹی کی عزت تھی آج وہ تقدس اور حرمت تار تار کر دی گئی چینی چور، آٹا،گھی، اور پٹرول چوروں کی حکومت نہیں چلنے دیں گے انہوں نے عوام سے عہد لیا کہ نواز شریف کی کال پر جہاں وہ بلائیں گے عوام  وہاں جائیں گے انہوں نے کہا کہ ڈیرہ غازی خان کی زرتاج کٹھ پتلی کہاں ہے شہر میں چوری ڈکیتی کے واقعات ہو رہے ہیں عوام کو لوٹا جا رہا ہے ان حالات میں جعلی حکومت کے خلاف عوام کے حقوق کی خاطر نکلے ہیں یہ اقتدار کی لڑائی نہیں پٹواری پیسے دیکر لگے یہ تبدیلی نامنظور کرتے ہیں بدمعاش نیازی سے جنگ ہے کشمیر فروخت کرنے والوں کو اقتدار میں نہیں رہنے دیں گے عوام سے خدمت کا عزم رکھنے پر نواز شریف اور شہباز شریف سے پیار کرتے ہیں سابق ممبر میونسپل کارپوریشن سید عمران شاہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا نیازی حکومت اپنے دن گننا شروع کر دے عوام اٹھ کھڑے ہوئے ہیں نیب پر شدید تنقید کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ نیب نیازی گٹھ جوڑ نہیں چلے گا حکومت کے جانے کے دن قریب آگئے ہیں جبکہ سیکٹری جنرل مسلم(ن)ظفر طاہر مستوئینے کہا کہ مسلم لیگ ن کے قایدین پر ناجایز مقدمات قابل مذمت اور شرمناک ہیں نائب صدر مسلم لیگ(ن) نواب طارق علی خان کاکڑ نے اپنے خطاب میں کہا کہ بارہ اکتوبر یوم سیاہ ہے ووٹ کو عزت دو کے لئے عوامی انقلاب کی راہ ہموار ہو چکی ہے سابق رکن صوبائی اسمبلی مظفر گڑھ سے ملک قسور لنگڑیال نے اپنے خطاب میں کہا کہ پارٹی میں خدمت کے لئے آئے ہیں تبدیلی کی اصل بنیاد رکھ دی ہے تبدیلی کا انقلاب لائیں گے جبکہ رکن صوبائی اسمبلی مظفر گڑھ سے محمد نواز ٹیپو نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیب نیازی گٹھ جوڑ کے خلاف عوامی ریفرنڈم ہوچکا پی ڈی ایم نے ملک میں مہنگائی، غربت، افلاس اور ملکی استحکام کے درپے قوتوں سے طبل جنگ کا آغاز کر دیا ہے ان ناجائز حکمرانوں کوگھر بھیج کر ہی دم لیں گیضلعی صدرپاکستان مسلم لیگ(ن)میر مرزا خان تالپور نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے شرکاء مظاہرین کا شکریہ ادا کیا نااہل اور نالایق حکومت کے خاتمے تک چین سے نہ بیٹھنیکا عزم  کیا انہوں نے کہا کہ جعلی منیڈیٹ کی حامل حکومت نے ملک کی جڑوں کو کھوکھلا کر دیا ہے انکی نالائقوں کا چلن جاری رہا تو قوم بے توقیر ہو جائے گی باوقار کون ہے؟اور بے توقیر کون ہے؟ 

نالائق حکومت کا چل چلاو سے یہ ثابت ہو گیا ہے اس موقعہ پر ڈویزن اور ضلع بھر کے مختلف علاقوں سے جوق در جوق سینیر اراکین اور کارکنان و عہدے داران نے بھر پور شرکت کی گو نیازی گو کے نعروں سے فضاء گونجتی رہی- عہدے داران و اراکین اسمبلی نے خطاب کرتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کی ناجایز گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکمران ناکام ہوچکے ہیں نیب گردی نہیں چلے گی انہوں نے کہا شرمناک یوم ہے کہ 20 برس گزرنے کے بعد بھی لوگ جمہوریت اور جمہوری حقوق کے لئے سڑکوں پر ہیں جنرل ر پرویز مشرف نے 1999 میں جمہوری حکومت کو ختم کر کے جمہوری حقوق اور عوامی آزادیاں سلب کیں تھیں آج تک بھی وہی سفاکیت کا کھیل جاری ہے کٹھ پتلی حکمرانوں کو مسلط کر کے سیاسی و جمہوری نظام کو نقصان پہنچایا گیا ووٹ کو عزت دو اور قانون کی حکمرانی و عوامی حقوق کی جدوجہد کا آغاز کر دیا ہے جو حکومت کے خاتمے اور عوام کی خوشحالی تک جاری رہے گی جمال خان لغاری محمود قادر خان لغاری،میر بادشاہ قیصرانی میاں سلطان ڈاہا شیخ محمد علی سابق چیرمین بیت المال،سرور صدیقی یوسی وائس چیرمین، شیخ محمد بلال سابق ممبر لیبر میونسپل کارپوریشن سینر رہنماء لغاری گروپ اور سابق صدر سردار فاروق لغاری مرحوم کے دیرینہ ساتھی شیخ ریاض اللہ والا و دیگر نے خطاب کیا اور بھر پور شرکت کی۔ دریں اثناء ہائی کورٹ ملتان لائیرز فورم مسلم لیگ ن ملتان ڈویثرن کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ کیا گیا اس موقع پر صدر ضیاء حیدر زیدی ایڈووکیٹ، جنرل سیکرٹری عابد حسین بھٹہ ایڈووکیٹ رانا مقصود افضل خان ایڈووکیٹ سینئر نائب صدر محمد نوید کوریجہ سینئر نائب صدر عذرا سعید ایڈووکیٹ نائب صدر عمران بھٹہ ایڈووکیٹ نائب صدر راؤ افتخار لیاقت ایڈووکیٹ سیکرٹری اطلاعات ترجمان ملک شاہد ایڈووکیٹ،طاہر ملک ایڈووکیٹ، یاسر علی ایڈووکیٹ،فیض الرحمن ایڈووکیٹ،رانا عارف ایڈووکیٹ، عادل بیگ ایڈووکیٹ، اسلم ہمایوں چوہدری سینئر نائب صدر لائیرزفورم مسلم لیگ ن ملتان ڈویثرن کے ممبران اور کثیر تعداد میں جمہوریت پسند وکلاء نے مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے لائیرزفورم مسلم لیگ ن ملتان ڈویثرن نے 12اکتوبر 1999کو جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے غیر آئینی غیر قانونی اقدام کی پرزور مذمت کی اور کہا گیا کہ 12اکتوبر1999پاکستان اور جمہوریت کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہے اس دور مشرف نے عوام کی منتخب کردہ میاں محمد نواز شریف کی جمہوری حکومت کو غیر آئینی طور پر غیر قانونی طریقہ سے گیراکر آئین شگنی جیسا سنگین جرم کیا جس سے وطن عزیز اور جمہوریت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہم ہر سال 12اکتوبر کو یوم سیاہ کے طور پر مناتے رہیں گے اور آئین توڑنے والے عذاروں کی حوصلہ شگنی کرتے رہیں گے ہم پاکستان میں جمہوریت کے قیام،استحکام،آئین کی بالادستی،قانون کی حکمرانی،سول سپر جسی ووٹ کی عزت کی خاطر اپنے قائدمیاں محمد نواز شریف کے ساتھ کھڑے ہیں۔ لودہراں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق خادم اعلیٰ شہباز شریف کی گرفتاری، تیزی سے بڑھتی مہنگائی اور لاقانونیت کے خلاف ملتان میں مسلم لیگ ن کی ریلی میں شرکت کیلئے جانیوالے ضلعی صدر پاکستان مسلم لیگ ن شیخ افتخارالدین تاری کو بستی ملوک چیک پوسٹ پر لودہراں پولیس نے روک لیا پولیس نے بھاری نفری کی نگرانی میں شیخ افتخارالدین تاری کو بستی ملوک کے ایک نجی ہسپتال میں بٹھا لیا اور بعد میں تھانہ جلہ آرائیں لے آئے۔ شیخ افتخارالدین تاری نے حکومتی بوکھلاہٹ پر اپنے بیان میں کہا کہ یہ کٹھ پتلی حکومت پہلے احتجاج میں ہی کانپ اٹھی ہے اور اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم جمہوریت کی بحالی کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے اور ایسی بزدلانہ کاروائیوں سے بالکل نہیں گھبرائیں گے۔ شیخ افتخارالدین تاری کو احتجاجی ریلی میں شرکت سے روکے جانے  پر عبدالرحمان خان کانجو اور دیگر پارٹی رہنماؤں نے شدید مذمت کی اور کہا کہ حکومت بری طرح ناکام ہوچکی ہے اور آنیوالے دنوں میں مہنگائی، غربت، لاقانونیت کے خلاف نکلنے والے عوام کے سمندر کو نہیں روک سکے گی۔ جبکہ ڈویژنل صدر پاکستان مسلم لیگ ن عبدالرحمان خان کانجو نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ پرامن احتجاجی ریلی میں شرکت کیلئے جانیوالے ضلعی صدر شیخ افتخارالدین تاری کو جلہ آرائیں پولیس کی طرف سے روکے جانے کی شدید مذمت کرتا ہوں اور انتظامیہ و پولیس کو بتانا چاہتا ہوں کہ حکومت کے کسی غیرقانونی عمل میں اس کا ساتھ نہ دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ 126 دن اسلام آباد میں تماشہ لگانے والے اپوزیشن کی پہلی ریلی سے ہی حواس باختہ ہوگئے ہیں اور اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہر غلط عمل کے سامنے ڈٹ جائیں گے اور عوام کو مہنگائی سے مزید نہیں مرنے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی غیرقانونی حراست کے خلاف احتجاج جاری رکھیں گے اور بی ڈی ایم کے جلسوں میں بھرپور شرکت کریں گے۔ اوچھے ہتھکنڈے ہمیں ہماری منزل تک پہنچنے سے نہیں روک سکتے۔ یاد رہے عبدالرحمان خان کانجو کی والدہ علیل ہیں اور وہ ان کی تیمارداری کیلئے لاہور ہسپتال میں ہیں 

مزید :

صفحہ اول -