نادرااپنے اختیارات کاغلط استعمال کررہاہے،اسلام آبادہائیکورٹ، سینیٹر حافظ حمد اللہ شہریت منسوخی کیس کا فیصلہ محفوظ

نادرااپنے اختیارات کاغلط استعمال کررہاہے،اسلام آبادہائیکورٹ، سینیٹر حافظ ...
نادرااپنے اختیارات کاغلط استعمال کررہاہے،اسلام آبادہائیکورٹ، سینیٹر حافظ حمد اللہ شہریت منسوخی کیس کا فیصلہ محفوظ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے سینیٹر حافظ حمد اللہ کی شہریت منسوخی کیس پر فیصلہ محفوظ کرلیا،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ نادرااپنے اختیارات کاغلط استعمال کررہاہے،عدالت شہریوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی برداشت نہیں کرسکتی ۔

نجی ٹی وی سما نیوز کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں شناختی کارڈ بلاک کئے جانے کے خلاف درخواستوں پر سماعت ہوئی ،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ کونسے کیسز میں شہریت ناہونے کی بنا پر شناختی کارڈ بلاک کئے گئے ،وکیل نے کہاکہ حافظ حمد اللہ کاشہریت کی بنیاد پر بلاک کئے گئے شناختی کارڈ کا کیس ہے۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ حافظ حمد اللہ صاحب کابیٹا تو ابھی پاس آﺅٹ نہیںہواتھا ،کیاحافظ حمد اللہ کی شہریت پر کسی کو کوئی شک ہو سکتا ہے ، وکیل نادران نے کہاکہ شناختی کارڈ رپورتس پر بلاک نہیں کرتے، پہلے بلا کر پوچھا جاتا ہے ۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ نادراکس حیثیت میں بلاتا ہے نادرا کے پاس تو یہ اختیار ہی نہیں ہے ،وکیل نادرا نے کہاکہ نادراشہری کو بلا کر شوکاز نوٹس جاری کرتا ہے، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ جب اختیار ہی نہیں تو نادراانہیں شوکاز نوٹس کیوں جاری کرتا ہے،حمد اللہ صاحب تو پارلیمنٹ کے رکن رہ چکے ہیں ،چیئرمین نادراکوبھی معلوم ہوگا۔

عدالت نے کہاکہ یہ تو ایلیٹ کلاس سے ہیں،نادراعام آدمی کے ساتھ کیاکرتا ہوگا،ہم اس معاملے کو ایک ہی بار طے کرینگے کہ آئندہ ایسا نہ ہو، کیا نادراکومعلوم ہے کہ ان کے اس اقدام کے اثرات کیاہوتے ہیں ۔

عدالت نے کہاکہ نادرااس طرح کسی شہری کے بنیادی حقوق چھین لیتا ہے ،حافظ حمد اللہ کا شناختی کارڈ کسی بنیاد پر بلاک کیاگیا ،وکیل نے کہاکہ حافظ حمد اللہ کے خلاف ایک شکایت آئی تھی ،چیف جسٹس نے کہاکہ کیانادرا آنکھیں بند کرکے شناختی کارڈ بلاک کردیتا ہے۔

عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ نادرااپنے اختیارات کاغلط استعمال کررہاہے،عدالت شہریوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی برداشت نہیں کرسکتی ،عدالت نے حافظ حمد اللہ کی شہریت منسوخی کیس پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -