”تمہاری سست بیٹنگ کی وجہ سے بلوچستان کیخلاف شکست ہوئی “ امام الحق پر انگلیاں اٹھنے لگیں

”تمہاری سست بیٹنگ کی وجہ سے بلوچستان کیخلاف شکست ہوئی “ امام الحق پر ...
”تمہاری سست بیٹنگ کی وجہ سے بلوچستان کیخلاف شکست ہوئی “ امام الحق پر انگلیاں اٹھنے لگیں
کیپشن:    سورس:   Twitter

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے اوپننگ بلے باز اور پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نیشنل ٹی 20 کپ فرسٹ الیون ٹورنامنٹ میں بلوچستان کی نمائندگی کرنے والے امام الحق کی سست بیٹنگ پر انگلیاں اٹھنے لگیں اور سندھ کے خلاف بلوچستان کی شکست کا ذمہ دار اوپنر کوہی قرار دیا جانے لگا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق قومی ٹی 20 کپ میں بلوچستان کے اوپنر امام الحق نے 60 گیندوں پر 11 چوکوں کی مدد سے ناقابل شکست92 رنز بنائے تاہم ان کی یہ اننگز ٹیم کو سندھ کے خلاف فتح دلانے کیلئے ناکافی ثابت ہوئی اور اس شکست کا سارا ملبتہ وجہ امام الحق کی سست بیٹنگ پر گرا دیا گیا ہے جنہوں نے آخری اوور میں صرف اپنی سنچری کی خاطر سنگل لینے سے گریز کیا جبکہ دوسرے اینڈ پر اس وقت پاور ہٹر بسم اللہ خان موجود تھے جنہوں نے تب صرف 5 بالز پر 15 رنز بنا لئے تھے، اس سلو اننگز کی وجہ سے بلوچستان کو شکست ہوئی مگر اس کے باوجود انہیں سرفراز احمد کے ساتھ مشترکہ مین آف دی میچ قرار دیا گیا جس پر تنقید بھی سامنے آئی۔ 

پاکستان کرک ٹیم کے سابق کھلاڑی اور موجودہ کمنٹیٹر رمیز راجہ نے بھی امام الحق کی سلو بیٹنگ پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اوپنر نے 92 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلی مگر اس کے باوجود ان کی ٹیم ہار گئی، ان دنوں ٹاپ آرڈر پر بڑی پارٹنرشپ فتح کی ضمانت نہیں ہے، اگر آپ 3 وکٹ پر 170 رنز بنائیں تو اس کا مطلب یہ ہے کہ آپ نے باقی 7 بلے بازوں کا آپشن ضائع کر دیا، اگر آپ 92 رنز بنائیں اور ٹیم پھر بھی ہار جائے تو اس کا صاف مطلب ہے کہ آپ کی رفتار سست تھی، میرے خیال میں ان جیسے بیٹسمینوں کو 10 سے 15 رنز مزید بنانا چاہئیں۔

مزید :

کھیل -