جو دل اُس کے کوچے سے آتا رہے گا | مصحفی غلام ہمدانی |

جو دل اُس کے کوچے سے آتا رہے گا | مصحفی غلام ہمدانی |
جو دل اُس کے کوچے سے آتا رہے گا | مصحفی غلام ہمدانی |

  

جو دل اُس کے کوچے سے آتا رہے گا 

تو البتہ وہ تلملاتا رہے گا 

نہ جاگیں گے خوابیدہ خوابِ عدم سے 

اگر ایک عالم جگاتا رہے گا 

گر اس فصلِ گل میں جیے گا دِوانا 

تو ہر سال دھومیں مچاتا رہے گا 

جو ملنا ہے تجھ کو تو آ جلد مل لے 

کہ پھر ہاتھ سے وقت جاتا رہے گا 

نہ ہو مصحفیؔ خصمیِ دل سے ایمن 

رہے گا یہ جب تک ستاتا رہے گا

شاعر: مصحفی غلام ہمدانی

(شعری مجموعہ:دیوانِ مصحفی ؛مرتبہ،نورالحسن نقوی، سالِ اشاعت،1966)

Jo    Dil   Uss   K   Koochay   Say   Aata   Rahay   Ga

To   Albatah   Wo   Tilmilaata   Rahay   Ga

 Na   Jaagen   Gay   Khaabeeda   Khaab-e-Adam   Say

Agar   Aik   Aalam   Jagaata   Rahay   Ga

Gar  Iss   Fasl-e-Gull    Men    Jiay   Ga     Diwaana

To   Har   Saal   Dhoomen   Machaata   Rahay   Ga

 Gar   Milna   Hay   Tujh   Ko   To   Aa   Jald   Mill   Lay

Keh   Phir   Haath   Say   Waqt     Jaata   Rahay   Ga

 No   Ho    MASHAFI   Khasmi -e-Dil   Say   Aiman

Rahay   Ga   Jab   Tak   Sataata   Rahay   Ga

 Poet: Mashafi   Ghulam   Hamdani

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -