قائد اعظم سولر پارک سے 100میگاواٹ بجلی بھی حاصل نہ ہوسکی

قائد اعظم سولر پارک سے 100میگاواٹ بجلی بھی حاصل نہ ہوسکی

  

ہمارے منصوبہ ساز اس مہارت سے ’’منصوبہ‘‘ ترتیب دیتے ہیں کہ ایسا معلوم ہوتا ہے اب اس ملک میں ’’دودھ کی نہریں‘‘ ہی بہا کریں گی، لیکن جب ایسے کسی منصوبے کی رونمائی ہوتی ہے تو وہ ریت کا ڈھیر نکلتا ہے کچھ ایسا ہی یہاں بجلی کی پیداوار کو بڑھانے کے منصوبوں کے ساتھ ہوا ہے ان میں سے کچھ تو ایسے زمیں بوس ہوئے ہیں کہ نقصان کا اندازہ ہی مشکل ہے جیسا کہ بہاولپور کے علاقے روہی میں قائد اعظم سولر پارک کے نام سے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا گیا جس کی اس وقت بہت زیادہ تشہیر کی گئی کہ اتنی کم لاگت میں اس منصوبے سے 1000 میگا واٹ بجلی حاصل کی جائے گی مگر یہ منصوبہ آج تک 100 میگا واٹ بجلی بھی پیدا نہیں کر سکا۔ شمسی توانائی کے اس شاہکار منصوبے کو کوڑیوں کے مول نجکاری کی طرف دھکیل دیا گیادوسری طرف سرائیکی قوم پرست جماعتوں کے اتحاد سرائیکستان عوامی اتحاد کی طرف سے نئے صوبے کے قیام کے لئے اسلام آباد تک ہونے والے لانگ مارچ کو 15 ستمبر تک موخر کر کے نیا شیڈول ترتیب دیا ہے جس کے مطابق کوٹ سبزل، صادق آباد سے پہلے مرحلے کا لانگ مارچ شروع ہو کر ملتان میں رکے گا اور پھر یہاں سے ایک ہفتے کے بعد اگلا مرحلہ شروع ہو گا جو اسلام آباد میں اختتام پذیر ہو گا سرائیکستان عوامی اتحاد کے رہنماؤں خواجہ غلام فرید کوریجہ، ذکاء اللہ انجم ملغانی، پروفیسر شوکت مغل، ظہور احمد دھریجہ، رانا فراز نون، ملک اللہ نواز وینس، عابدہ بخاری، صبا فیصل، سید مطلوب بخاری، جام فیض اللہ جاوید چنڑ، چوہدری فیصل، رانا ذیشان نون، عبدالباری، اشرف لنگاہ اور زبیر دھریجہ کا کہنا ہے کہ وہ اس لانگ مارچ کے ذریعہ حکومت کو علیحدہ صوبے کے قیام، مردم شماری میں خطے کے ساتھ زیادتی اور دیگر مسائل سے آگاہ کریں گے اس خطے میں خصوصاً ملتان، میانوالی روڈ، جو ایم ایم روڈ کہلاتا ہے مظفر گڑھ سے علی پور اور ہیڈ پنجند سڑک، مظفر گڑھ سے ڈی جی خان اور کشمور سے آنے والی انڈس ہائی وے پر جان لیوا حادثات نے کئی خاندانوں کو برباد کر دیا ہے یہ مذکورہ سڑکیں ہائی وے تو ہیں لیکن دو رویہ نہیں ہیں اس لئے ان سڑکوں پر آئے دن حادثات ہوتے رہتے ہیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو کے قریبی ساتھی ملتان کی تحصیل شجاع آباد کی نون برادری اور گروپ کے سربراہ بزرگ سیاستدان الحاج حافظ رانا تاج احمد نون گذشتہ روز یہاں 103 سال کی عمر میں خالق حقیقی سے جا ملے وہ شجاع آباد کے بڑے زمینداروں میں شمار ہوتے تھے جبکہ سیاست میں شرافت کی اپنی مثال آپ تھے اور تمام عمر اپنی زمین بیچ کر سیاست کی کبھی کسی کے زیر بار نہیں ہوئے اللہ تعالیٰ نے انہیں اولاد کی نعمت سے محروم رکھا لیکن انہوں نے آخری عمر میں اپنے برادر نسبتی کے بچوں کو اپنا لیا تھا۔ ان کی نماز جنازہ میں مخدوم جاوید ہاشمی، سید احمد مجتبیٰ گیلانی، عبدالقادر گیلانی، صوبائی وزیر اقبال چنڑ، رکن قومی اسمبلی ملک عامر ڈوگر، رانا قاسم نون اور رانا سہیل نون سمیت ہزاروں سوگواروں نے شرکت کی ان کی وفات سے شرافت کی سیاست کا ایک عہد ختم ہو گیا۔

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار پر مشتمل پانچ رکنی بنچ نے لاہور ہائی کورٹ ملتان بار ایسوسی ایشن کے صدر شیر زمان قریشی کی گرفتاری کے خلاف دائر اپیل کی سماعت میں صدر سپریم کورٹ بار رشید اے رضوی اور حامد خان نے شیر زمان کی جانب سے تحریری معافی نامہ عدالت میں پیش کیا، انہوں نے کہا کہ عدلیہ کی عزت کرتے ہیں بار کی عزت عدلیہ سے ہے، ناگزیر حالات کی بناء پر ہائیکورٹ پیش نہیں ہونا چاہتے اسی لئے اپیل دائر کی۔ انہوں نے کہا کہ میرے لیے یہ واقعہ تکلیف دہ ہے۔ اس موقع پر جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ اگراَنا کا مسئلہ نہیں تو ہائیکورٹ میں پیش ہو جائیں یہ احسن حل ہے۔

ملک کے دیگر شہروں کی طرح ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں بھی برما کے مسلمانوں کی نسل کشی کیخلاف دینی، سیاسی و سماجی تنظیموں نے یوم احتجاج منایا، جگہ جگہ احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور ریلیاں بھی نکالی گئیں، اس ضمن میں علامہ مظہر سعید کاظمی کی اپیل پر مرکزی میلاد کونسل ملتان کے زیر اہتمام جامعہ مسجد طو طل پورہ سے نماز جمعہ کے بعد ریلی نکالی گئی جس میں دینی و سیاسی جماعتوں، تنظیموں کے نمائندوں، اہلیان علاقہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی احتجاجی ریلی کی قیادت جماعت اہلسنت پنجاب کے ناظم اعلیٰ علامہ محمد فاروق خان سعیدی، علامہ سعید احمد فاروقی، ڈاکٹر محمد صدیق خان قادری، رانا عبدالجبار، شیخ یونس، مولانا مطیع الرسول سعیدی، سید رمضان شاہ فیضی، علامہ سلیم بلالی، قاضی محمد بشیر گولڑوی، علامہ خادم حسین سعیدی، شیخ محمد یونس، پیر عزیز رسول صدیقی، ڈاکٹر ارشد بلوچ، محمد عمیر صدیقی، قاری بشیر گولڑوی، قاری خادم حسین سعیدی و دیگر نے شرکت کی۔ معصوم شاہ روڈ جان محمد چوک پر مسلم لیگ (ن) کے رہنما یوسی 9 کے چیئرمین شیخ ندیم اکبر کی قیادت میں بھی برما کے مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لئے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ اور تحریک صراط مستقیم کے زیر اہتمام بھی برما کے مسلمان احتجاجی مظاہرے کی قیادت مولانا باقر جلالی، مولانا مرید حسین سعیدی، مولانا الیاس معینی، مولانا قاسم رضوی، مولانا ناصر چشتی، علامہ جاوید جلالی، حافظ نوید گل، حافظ ریحان باروی نے کی شیعہ علماء کونسل کی اپیل پر گزشتہ روز یوم احتجاج منایا گیا۔ مولانا حسین بخش سروری محلہ جھک میں علامہ کاشف ظہور نقوی، علی یونیورسٹی میں مولانا ظفر حقانی اور بشارت قریشی، امام بار گاہ مہدویہ کمپلیکس مولانا سلطان علی شاہ، مسجد جعفریہ مظفر آباد مولانا غلام رضا نقوی، غازی آباد میں مولانا غلام حسین نے نماز جمعہ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے دل برما کے مسلمانوں کے ساتھ ہیں شیعہ علماء کونسل اور جعفریہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن ملتان کی برما میں مسلمانوں پر ہونے والے مظالم کے خلاف مسجد جعفریہ سے علمدار چوک سور ج میانی تک بعد نماز مغرب احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ ریلی سے سید محمد شاہ ایڈووکیٹ ڈویژنل صدر شیعہ علماء کونسل ملتان، مولانا کاشف ظہور نقوی ضلعی صدر شیعہ علماء کونسل ملتان، کامران حیدر، سینئر نائب صدر شیعہ کونسل ملتان اور یاسر علی صدیقی ڈویژنل صدر جعفریہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن ملتان نے خطاب کیا۔برما کے مظلوم مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کیلئے مدرسہ خیر المدارس ملتان میں ہونے والے نمائندہ اجلاس کی صدارت قاری محمد حنیف جالندھری نے کی جبکہ اجلاس میں جمعیت علماء پاکستان کے محمد ایوب مغل، ضلع امن کمیٹی کے ممبر سید علی رضا گردیزی، پاکستان علماء کونسل کے رہنما علامہ عبدالحق مجاہد، مرکزی جمعیت اہلحدیث کے علامہ عنایت اللہ رحمانی، جماعت اسلامی کے شیخ جمشید حیات ایڈووکیٹ،مرکزی جمعیت اہلحدیث کے عبدالرحیم گجر، نظام مصطفی پارٹی کے وسیم ممتاز ایڈووکیٹ، شیعہ علماء کونسل کے بشارت عباس قریشی، جمعیت علماء پاکستان کے حافظ قریشی کے علاوہ انجینئر اشفاق، مفتی محمد عثمان ، مولانا آصف حنیف جالندھری، عبدالقیوم، نجم الحق، قاری عبدالغفار طارق، صاحبزادہ انور الحق مجاہد، پروفیسر عبدالماجد وٹو، قاری محمد عثمان مدنی، غازی عبدالرحیم ہاشمی نے بھی شرکت کی، مقررین نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مظالم کو رکوانے کیلئے اپنا عملی کردار اد ا کریں۔ 34 ممالک کا اتحاد جس مقصد کیلئے بنایا گیا تھا اسے برما میں اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -