اراضی پر فضلہ پھینکنے کیخلاف درخواست کیساتھ حکومتی نوٹیفکیشن لگانے کا حکم

اراضی پر فضلہ پھینکنے کیخلاف درخواست کیساتھ حکومتی نوٹیفکیشن لگانے کا حکم

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے 65ایکڑ زرعی زمین پر فضلہ پھینکنے کیخلاف دائردرخواست کے ساتھ نوٹیفکیشن لگانے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے۔چیف جسٹس ہائیکورٹ سید منصور علی شاہ نے پسرور کے رہائشی محمد اسلم وغیرہ کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزاروں کے وکیل جاوید اقبال نے عدالت کو بتایا کہ حکومت پنجاب نے ایشین ڈویلپمنٹ بینک کے ساتھ مل کر پسرور شہر سے ویسٹ ٹھکانے لگانے کا معاہدہ کیا، بدقسمتی سے حکومت نے ویسٹ ڈمپنگ کے لئے ناقابل کاشت کی بجائے قابل کاشت زرعی اراضی پر ویسٹ ڈمپنگ کا آغاز کر دیا، انہوں نے کہا کہ 65 ایکٹر زرعی زمین ویسٹ ڈمپنگ کے لئے چاول کی کاشت کی جگہ پر ویسٹ پھینکی جا رہی ہے، زرعی زمین پر ویسٹ کی وجہ سے ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ اور زراعت کو نقصان پہنچایا جارہا ہے ،اردگرد کی آبادیاں متاثر ہو رہی ہیں۔سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ویسٹ ڈمپنگ کا آغاز تمام قوانین پر عملدرآمد کر کے شروع کیا گیا ہے۔ درخواست گزاروں نے محض اخباری خبروں کو بنیاد بنا کر عدالت سے رجوع کیا ہے۔

فضلہ ٹھکانہ

مزید :

علاقائی -