معیشت کی غلط سمت سب سے بڑا خطرہ ہے، عاطف اکرام شیخ

معیشت کی غلط سمت سب سے بڑا خطرہ ہے، عاطف اکرام شیخ

  

اسلام آباد (آن لائن)ایف پی سی سی آئی کی ریجنل کمیٹی برائے صنعت کے چئیرمین عاطف اکرام شیخ نے کہا ہے کہ ملکی معیشت کو لاحق سب سے بڑا خطرہ توانائی بحران، امن و امان کی صورتحال اور موجودہ ڈالر کا بحران نہیں بلکہ معیشت کی غلط سمت ہے۔ اقتصادی پالیسیوں میں ہم آہنگی کی کمی، اہم سرکاری محکموں کے مابین تعاون کا فقدان اور حکومت و نجی شعبہ کے مابین نہ ختم ہونے والی کشمکش بڑا مسئلہ بن چکی ہے۔ترقی یافتہ ممالک میں حکومتی اور نجی شعبہ مل کر مسائل کا حل ڈھونڈتے ہیں جبکہ یہاں ایک دوسرے کیلئے مسائل ڈھونڈے جاتے ہیں۔عاطف اکرام شیخ نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ تعلیمی، لیبر اور انڈسٹریل پالیسوں میں مطابقت نہیں اس لئے سالانہ تقریباً بیس لاکھ نوجوان لیبر مارکیٹ کا رخ کر رہے ہیں جنکے لئے روزگار کے مواقع نہیں ہیں جو ملکی مستقبل کیلئے بہت بڑا خطرہ ہے ۔ترقی یافتہ ممالک میں آنے والی دہائیوں اور صدیوں کی منصوبہ بندی کی جاتی ہے جبکہ ہمارے ملک میں روز مرہ مسائل سے نمٹنے کو ہی ترجیح دی جاتی ہے۔

اورطویل المعیاد منصوبہ بندی کا کوئی رواج نہیں ہے جسکی وجہ سے ہم عالمی سطح پر آنے والی تبدیلیوں کا مقابلہ کرنے کیلئے تیاری نہیں کر پاتے۔ٹیکنالوجی کی وجہ سے دنیا بھر میں زبردست تبدیلیاں آ رہی ہیں مگر پاکستان میں ان تبدیلیوں سے عہدہ براہ ہونے کی کوئی کوشش نہیں ہو رہی۔ایک اندازہ کے مطابق اگلے دس سے بارہ سال میں امریکہ اور یورپ ٹیکسٹائل کی درامد بالکل بند کر سکتے ہیں کیونکہ یہ مصنوعات وہاں روبوٹ انتہائی سستے داموں بنائیں گے جو پاکستان، بنگلہ دیش، ویتنام، چین اور بھارت کی مشکلات میں اضافہ کرے گا۔ انھوں نے کہا کہ حکومت اقتصادی استحکام ،بے روزگاری کا خاتمہ، آمدنی میں اضافہ اور ملکی و غیر ملکی قرضوں پر انحصار ختم کرنا چاہتی ہے مگر اسکے لئے صنعتی بنیاد کو پھیلانے کے اقدامات نہیں کئے جاتے بلکہ پاکستان میں صنعتی شعبہ مسلسل سکڑ رہا ہے جس سے ملک ٹریڈنگ سٹیٹ بن رہا ہے۔صورتحال یہاں تک جا پہنچی ہے کہ ملک کی معاشی شہہ رگ کراچی میں صنعتی پلاٹوں کی قیمت رہائشی پلاٹوں سے کم ہے جس سے صنعتکاروں کی مایوسی اور صنعتی شعبہ کی زبوں حالی کا پتہ چلتا ہے۔حکومت کو صحت اور تعلیم پر بھرپور توجہ دینے کی ضرورت ہے مگر اسکی زیادہ توجہ برامدات، پیداواری مسابقت، تنوع اوربرامدات پر رہتی ہے جسکا نتیجہ سب کے سامنے ہے۔ پاکستان کے بعد آزاد ہونے والے ممالک نے اقتصادی سمت درست کرنے کو اولین ترجیح دی جبکہ ہم ستر سال سے اس سے محروم ہیں۔۔#/s#

مزید :

کامرس -