سقراط اور بقراط بننے والے بیرونی طاقتوں کے مہرے، سی پیک کو کوئی رول بیک نہیں کر سکتا: احسن اقبال

سقراط اور بقراط بننے والے بیرونی طاقتوں کے مہرے، سی پیک کو کوئی رول بیک نہیں ...

  

کراچی (آن لائن)وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ مضبوط معیشت ہی مستحکم ملک کی ضمانت ہے اورسی پیک سے خطے کی اہمیت میں بھی اضافہ ہوگا،دشمن کی کوشش ہے ہمیں کسی تنازع کی طرف لے جائے تاکہ سی پیک کونقصان پہنچایا جائے ،سقراط اوربقراط بننے والے بیرونی طاقتوں کے مہرے ہیں،سن لیں وہ پاکستان چین دوستی کونقصان نہیں پہنچا سکتے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ مضبوط معیشت ہی مستحکم ملک کی ضمانت ہے اورسی پیک سے خطے کی اہمیت میں بھی اضافہ ہوگا،دشمن کی کوشش ہے ہمیں کسی تنازع کی طرف لے جائے تاکہ سی پیک کونقصان پہنچایا جائے ،سی پیک پاکستان کے مستقبل کامنصوبہ ہے،ضرورکامیاب ہوگا،انہوں نے کہا کوسٹل ایریاکیلئے حفاظتی اقدامات انتہائی ضروری ہیں کیونکہ شرپسنداورجرائم پیشہ عناصرسمندری راستہ استعمال کرتے ہیں۔وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ سمگلنگ ایک ناسورہے جومعیشت کوکھوکھلاکرتاہے،دہشت گردسمندری راستہ استعمال کرتے ہیں،دراندازی کوروکنے کیلئے افغان سرحدکی موثر نگرانی کررہے ہیں اورسول اورعسکری نظام کے ذریعے سرحدوں کومحفوظ بنایاہے، کوسٹ گارڈ زکوسمگلنگ کی روک تھام سخت کرنے کی ہدایت کی ہے ، احسن اقبال نے کہا کہ بدلتی صورتحال میں خطہ سیاسی سے نکل کرمعاشی اہمیت اختیارکرگیاہے،دنیا بدل چکی ہے ہم جیو اکنامکس کے دور میں ہیں ،وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ خواجہ اظہار پر حملے کے بعد سامنے آنے والے دہشتگردوں کے نئے گروپ کا کافی حد تک خاتمہ کردیا،چندایک لوگ مفرورہیں انہیں بھی پکڑلیں گے،جلداس گروپ کے خاتمے کی خوش خبری سنائیں گے، احسن اقبال نے کہا کہ سوشل میڈیاپردہشتگردگروہ نوجوانوں کواپنی جانب راغب کرکے بہکادیتے ہیں،تعلیمی اداروں میں طلبا کی موثر نگرانی ،رابطے کا نظام وضع کرنے کی تجویز دی ہے،وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ پہلے ہی کہاتھا چودھری نثار کی پالیسیوں کو لیکرچلیں گے،وزیراعظم تبدیل ہوئے ہیں حکومت نہیں،حکومت اورعسکری ادارے مل کرآپریشن ردالفسادکوکامیاب کریں گے۔دہشت گردی کا جڑ سے خاتمہ کریں گے اور ان کے سہولت کاروں کو بھی انجام تک پہنچائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کو پرامن بنانا سیاسی وعسکری قیادت اورپوری عوام کا مشن ہے اور ہم نے اس مشن کی تکمیل کیلئے کئی جانیں بھی قربان کی ہیں لہذا ہم اسے کبھی ادھورا نہیں چھوڑ سکتے ۔دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاک فوج کی قربانیاں لائق تحسین ہیں اور پاکستان میں قیام امن کیلئے اگر مزید بھی قربانیاں دینا پڑیں تو اس سے گریز نہیں کریں گے ۔

مزید :

صفحہ آخر -