گیس چوری کیخلاف کریک ڈاؤنز، کمپنی کو اربوں کا منافع، یو ایف جی شرح میں 2فیصد کمی

گیس چوری کیخلاف کریک ڈاؤنز، کمپنی کو اربوں کا منافع، یو ایف جی شرح میں 2فیصد ...

  

لاہور(لیاقت کھرل ) سوئی گیس کمپنی لاہور ریجن کی ٹیموں نے امسال ابتک گیس چوری کیخلاف کریک ڈاؤن کے دوران 500 مقامات پر چھاپے مارے ہیں ،جن کے تحت سب سے زیادہ 191 بائی پاس کے ذریعے جبکہ 200 جعلی میٹروں سے 350 ملین کیوبک فٹ گیس کی چوریاں پکڑیں جس کے باعث گیس کمپنی کو اربوں روپے منافع ہوااوریو ایف جی شرح میں دو فیصد کمی ہوئی۔ گیس کمپنی لاہور ریجن سے ملنے والے اعدادوشمار کے مطابق امسال اب تک لاہور میں گیس چوری کیخلاف 500 مقامات پر چھاپے مارے گئے ہیں، جس میں 191 بائی پاس اور 200 جعلی میٹر پکڑے گئے ہیں،جو گیس کی سپلائی لائنوں پربائی پاس لگا کر یا جعلی میٹروں سے گھروں، فیکٹریوں اور کار خا نو ں کو گیس سپلائی کی جا رہی تھی ،چھاپوں میں مجموعی طور پر 460 گھروں پر مشتمل جعلی نیٹ ورک پکڑے گئے ، جن میں مانگا منڈی کے علاقہ میں 80 ، لکھو ڈیئراورکینال سوسائٹی ٹھوکر نیاز بیگ میں 70،70 ، باٹا پور اور بھینی روڈ پر30 ،30 گھروں کے جعلی نیٹ ورکس پکڑے گئے، جبکہ کریک ڈاؤن کے دوران 200 جعلی میٹروں سے بھی گیس چوری پکڑی گئی جو جعلی نیٹ ورک کیساتھ کارخانوں اور فیکٹریوں کو چوری کی گیس سپلائی کر رہے تھے ۔ گجر پورہ میں نمکو فیکٹری، مومن پورہ ، باغبانپورہ اور کوٹ لکھپت میں جعلی میٹر کیساتھ بائی پاس بھی لگا کر گیس چوری کی جا رہی تھی جس کے ذریعے سالانہ اڑھائی ارب سے زائد اور 350 ملین کیوبک فٹ گیس چوری کی جا رہی تھی۔ اس ضمن میں جی ایم گیس کمپنی لاہور ریجن قیصر مسعود نے ’’ پاکستان‘‘ کو بتایا کہ امسال کے 8 ماہ کے دوران گیس چوری کیخلاف بڑے پیمانے پر کر یک ڈاؤن کیا گیا ہے جس سے جعلی نیٹ ورک کا خاتمہ ہو کر رہ گیا ہے اور تین کروڑ سے زائد کی گیس چوری پکڑی گئی ہے۔ تمام ملزموں کیخلا ف مقدمات کے اندراج کیساتھ جرمانے ڈال دئیے گئے ہیں۔ گیس چوری کیخلاف موثر حکمت عملی سے یو ایف جی کی شرح میں دو فیصد کمی واقع ہوئی ہے اور بھرپور کریک ڈاؤن کر کے یو ایف جی مزید دو فیصد کم کی جائے گی جس سے گیس کمپنی کو مزید سالانہ اربوں روپے کا منافع ہو گا۔

مزید :

صفحہ آخر -