قائد کی تعلیمات پر عمل ہوتا تو آج ملک کو پریشانیاں نہ ہوتیں، غضنفر مہدی

قائد کی تعلیمات پر عمل ہوتا تو آج ملک کو پریشانیاں نہ ہوتیں، غضنفر مہدی

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)ممتاز سکالر اور انجمن تاریخ وآثار شناسی پاکستان کے چیئرمین ڈاکٹر غضنفر مہدی نے کہا ہے کہ اگر قائد اعظم کی تعلیمات پر عمل کیا جاتا تو آج ملک کو پریشانیوں کا سامنا نہ کرنا پڑتا انہوں نے یہ بات انجمن تاریخ وآثار شناسی پاکستان کے زیر اہتمام بانی پاکستان حضرت قائد اعظم محمد علی جناح کی یوم وفات پر منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔انہوں نے کہا کہ حضرت قائد اعظم کی ولولہ انگیز قیادت کی وجہ سے جنوبی ایشیا کے مسلمانوں کو علیحدہ فلاحی مملکت پاکستان معرض وجود میں آئی ۔اگر قائد اعظم زندہ رہتے یا انکی تعلیمات پر عمل کیا جاتا تو آج ملک کو جو سیاسی ،اقتصادی اور سماجی مسائل درپیش ہیں وہ کہیں نظر نہ آتے۔نامور مورخ پروفیسر ڈاکٹر ریاض احمد نے کہا کہ قائد اعظم مذہبی انسانی اور فرقہ وارنہ عصبیت کے خلاف تھے وہ اقلیتوں کو بھی اکثریت کے برابر حقوق دینا چاہتے تھے وہ پارلیمنٹ کو سب سے بڑا طاقتور ادارہ بنانے کے حق میں تھے اگر انکے سیاسی نظریات پر عمل کیا جاتا تو ملک میں مارشل لاء کا نفاذ نہ ہوتا۔پروفیسر فرحت گل نے کہا کہ ہر اہم موقع پر قائد اعظم نے اپنی عظیم بہن فاطمہ جناح کو اپنے ہمراہ رکھا اور خواتین کو عملی زندگی میں مؤثر نمائندگی دی۔کانفرنس میں ایک قرارداد کے ذریعے حکومت سے اپیل کی گئی کہ محرم الحرام میں سید الشہداء حضرت امام حسین کے حوالے سے فکری اور ملی یکجہتی کی فضا ہموار کی جائے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -