نیب کا خیبر پختو نخوا شعبہ ٹورازم کی اربوں مالیت کی زمین الاٹ کرنیوالوں کے مجا سبہ کا اعلان

نیب کا خیبر پختو نخوا شعبہ ٹورازم کی اربوں مالیت کی زمین الاٹ کرنیوالوں کے ...

اسلام آباد (آن لائن) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے دو ٹوک الفاظ میں واضح کیا ہے کہ کے پی کے حکومت کے مشہور زمانہ شعبہ ٹورازم کے سکینڈل کی تحقیقات مکمل کی جائیں گی اور ان تحقیقات کے دوران مبینہ ملزمان کیساتھ نہ کوئی رعایت ہوگی نہ ہی کسی سے مرعوب ہوں گے، سکینڈل میں صوبہ کے پی کے کی سینکڑوں ایکڑ اراضی اعلیٰ اختیارات کے حامل لوگوں کے صوابدیدی اختیا ر ا ت کے تحت من پسند کمپنی کو الاٹ کردی تھی۔ انہوں نے اس عزم کا اظہارگزشتہ روز اسلام آباد میں ایک تقریب سے خطاب میں کیا،اس موقع پر دبئی پلٹ ایک کاروباری شخصیت نے تقریب میں اٹھ کر چیئرمین نیب کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی کمپنی نے کے پی کے میں سیاحت کے فروغ کیلئے 1 ارب 50 کروڑ کی سرمایہ کاری کی لیکن نیب کے پی کے حکام ان کا پیچھا کررہے ہیں اور بار بار تحقیقات کیلئے کمپنی انتظامیہ کو طلب کررہے ہیں۔ سیاحتی کمپنی کے نمائندہ نے مطالبہ کیا کہ وہ نیب کے تحقیقاتی افسران کو ہراساں کرنے سے روکیں یہ بات سنتے ہی چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا مجھے علم ہے کے پی کے کی وزارت سیاحت میں اربوں روپے کا سکینڈل ہے اور بعض اعلیٰ اختیارات کی حامل شخصیات نے صوابدیدی اختیارات کے تحت من پسند کمپنی کو اربوں روپے کی زمین الاٹ کی تھی اور قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی میں ملوث ہیں، نیب اس سکینڈل کی تہہ تک جائے گا اور ملوث شخصیات کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا کیونکہ کے پی کے کے سیاحتی مر کز میں اربوں مالیت کی سرکاری زمین کوڑیوں کے بھاؤ الاٹ ہوئی ہے ہم اس ذمہ داری کو پورا کریں گے جس پر سیاحتی کمپنی کے نمائندہ خا موش ہوکر بیٹھ گئے ۔سابق وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کے دور میں کے پی کے شعبہ سیاحت کے افسران نے سیاحتی مرکز مالم جبہ کے مقام پر اربو ں مالیت کی زمین نجی کمپنی کو الاٹ کی تھی، اس سکینڈل میں سابقہ حکومت کے اعلیٰ عہدوں پر تعینات متعدد افسران کو مبینہ ملزم قرار دیا گیا ہے ا و ر سکینڈل کی تحقیقات مکمل ہونے پر اعلیٰ عہدوں پر براجمان افسران اور شخصیات سے عہدے چھننے اور گرفتاریوں کا بھی امکان ہے۔

چیئرمین نیب

مزید : علاقائی