ٹرانسپورٹرز کی نجی سیکٹر میں اڈے بند کرنے کیلئے 18ستمبر کی پہیہ جام ہڑتال کی ڈیڈ لائن

ٹرانسپورٹرز کی نجی سیکٹر میں اڈے بند کرنے کیلئے 18ستمبر کی پہیہ جام ہڑتال کی ...

پشاور(سٹی رپورٹر)پشاورکی ٹرانسپورٹ برادری نے جنرل بس سٹینڈ اور پشاور بس ٹرمینل کے باہر جی ٹی روڈ پر نجی سیکٹر میں ٹرانسپورٹ اڈے کھولنے کیخلاف علم بغاوت بلندکرتے ہوئے صوبائی حکومت و محکمہ ٹرانسپورٹ کو 18ستمبر سے قبل تمام نجی ٹرانسپورٹ سٹینڈ بند کرنیکی ڈیڈلائن دیتے ہوئے پہیہ جام ہڑتال کی دھمکی دے دی ہیں۔ پبلک ٹرانسپورٹ اونر ایسوسی ایشن کے صدر خان زمان آفریدی، متحدہ ٹرانسپورٹ اونر ایسوسی ایشن کے صدر نورمحمد مہنمد، شاہین ٹرانسپورٹ اونر ایسوسی ایشن کے صدر صاحب شاہ یوسفزئی اور اسلام آباد راولپنڈی ٹرانسپورٹ اونر ایسوسی ایشن کے صدر محمد عالم کا اجلاس جنرل بس سٹینڈ پشاور میں منعقد ہوا۔ اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے ٹرانسپورٹ برادری نے کہاکہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے جنرل بس سٹینڈ اور محکمہ ٹرانسپورٹ کے بس ٹرمینل پشاور میں ٹرانسپورٹر بھاری بھرکم شیڈول فیس ادا کرتے ہیں اور حکومت کی طرف سے مراعات نہ ہونے کے باوجود مسافروں کو منزل مقصود تک پہنچاتے ہیں لیکن محکمہ ٹرانسپورٹ اور سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے این او سی سے نجی سیکٹر میں ٹرانسپورٹ کے اڈے کھول دیئے گئے ہیں جس پر شیڈول ٹیکس بھی نہ ہونے کے برابر ہے جس کی وجہ سے سرکاری اڈے کے ٹرانسپورٹر کا کاروبار ٹھپ پڑگیاہے اور حکومت و محکمہ ٹرانسپورٹ نجی سیکٹر کے اڈے بند کرے بصورت دیگر18 ستمبر کے بعد پہیہ جام ہڑتال شروع کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر