ضلع کرم کا حاجی گل بت خان جیل میں دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق

ضلع کرم کا حاجی گل بت خان جیل میں دل کا دورہ پڑنے سے جاں بحق

پاراچنار(نمائندہ پاکستان) ضلع کرم کا اسی سالہ قبائلی سردار حاجی گل بت چمکنی دل کا دورہ پڑنے سے جیل میں انتقال کرگئے مشتعل لوگوں نے میت اٹھاکر ڈی سی آفس کے سامنے احتجاج شروع کردیاسابق انجینئر رشید احمد خان کے مطابق پاڑہ چمکنی کے دو قبائل خانی خیل اور گنداو کے مابین معدنیات کے لیز کے سلسلے میں تنازعہ چلا آرہا تھا جس پر مقامی انتظامیہ نے دونوں قبائل کے عمائدین کو گرفتار کرلیا آج صبح صدہ جیل میں پاڑہ چمکنی قبائل کے سردار حاجی گل بت پر صدہ جیل میں دل کا دورہ پڑا جو جان لیوا ثابت ہوا قبیلے کے لوگوں نے میت اٹھاکر احتجاجی جلوس کی شکل میں پاراچنار شہر پہنچ گئے اور میت کے ہمراہ ڈی سی آفس کے سامنے احتجاج شروع کردیا اس موقع پر سابق سینیٹر رشید احمد خان اور دیگر قبائلی عمائدین نے میڈیا کو بتایا کہ ایف سی آر ختم ہوچکا ہے مگر اس کے باوجود ایف سی آر کا غلط استعمال افسوسناک ہے عمائدین نے مطالبہ کیا کہ ڈی سی کرم، تحصیلدار اور صوبیدار میجر خاصہ دار فورس کے خلاف کاروائی کی جائے مقامی انتظامیہ نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ گنداو اور خانی خیل قبائل کے مابین معدنیات کے لیز کے سلسلے میں تنازعہ شدت اختیار کرگیا تھا اور خونریزی کا خدشہ تھا اس وجہ سے دونوں فریقین سے متعدد افراد اور قبائلی عمائدین کو حراست میں لیا گیا تھا جن میں حاجی گل بت پاڑہ چمکنی پر دل کا دورہ پڑا جو جان لیوا ثابت ہوا انجمن حسینیہ کے سیکرٹری جنرل حاجی نور محمد اور طوری بنگش قبائل کے عمائدین نے بھی احتجاجی مظاہرین سے خطاب کیا مظاہرین کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے 73 بریگیڈ کے کمانڈر بریگیڈیئر اختر علیم خان نے کہا کہ تحصیلدار اور خاصہ دار فورس کے صوبیدار میجر کو معطل کیا گیا ہے اور واقعے کے حوالے سے مزید تحقیقات جاری ہیں بریگیڈیئر اختر علیم کے تقریر کے بعد مظاہرین احتجاج ختم کرکے میت کے ہمراہ واپس چلے گئے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر